غیر ملکی خاتون کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنانے والے پاکستانی نوجوان کے ساتھ دبئی کی جیل میں ایسا کام ہوگیا کہ جان کر آپ بھی کانپ اُٹھیں گے

غیر ملکی خاتون کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنانے والے پاکستانی نوجوان کے ساتھ ...
غیر ملکی خاتون کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنانے والے پاکستانی نوجوان کے ساتھ دبئی کی جیل میں ایسا کام ہوگیا کہ جان کر آپ بھی کانپ اُٹھیں گے

  

دبئی سٹی (مانیٹرنگ ڈیسک) متحدہ امارات میں غیر ملکی خاتون کے اغوا اور عصمت دری کے الزامات میں گرفتار پاکستانی نوجوان عدالت کی جانب سے سزا کا حکم سنائے جانے سے پہلے ہی زندگی کی قید سے آزاد ہوگیا۔

گلف نیوز کی رپورٹ کے مطابق دو پاکستانی شہریوں کو گزشتہ سال ستمبر میں اس وقت گرفتار کیا گیا جب سری لنکا سے تعلق رکھنے والی ایک خاتون نے ان پر اغوا اور عصمت دری کا الزام لگایا۔ خاتون کا کہنا تھا کہ وہ القوز کے علاقے میں ٹیکسی کا انتظار کررہی تھی کہ جب دو افراد نے اسے زبردستی ایک گاڑی میں ڈالا اور اغوا کرکے لے گئے۔ خاتون نے بتایا کہ دونوں ملزمان اسے اغوا کرکے دبئی کے نواحی علاقے میں لے گئے جہاں دونوں نے دو، دو بار اسے زیادتی کا نشانہ بنایا اور جان سے ماردینے کی دھمکیاں بھی دیں۔

دبئی کی سڑک پر نیم برہنہ حالت میں بھاگتی غیرملکی لڑکی، بالآخر لوگوں نے روک کر پوچھا تو ایسی شرمناک ترین وجہ بتادی کہ ہر کوئی ہل کر رہ گیا

خاتون کی شکایت پر دونوں ملزمان کو گرفتار کرلیا گیا اور ان کے خلاف قانونی کاروائی شروع کر دی گئی۔ اب یہ اطلاع سامنے آئی ہے کہ ان میں سے ایک 31 سالہ ملزم کی دوران حراست موت ہو گئی ہے۔ عدالت نے ملزم کی موت کی تصدیق ہونے پر اس کے خلاف مقدمہ ختم کردیا ہے۔

مزید :

عرب دنیا -