سات ماہ بعد الطبقہ شہر مکمل طور داعش سے آزاد کرالیا، شامی کرد فورسز

سات ماہ بعد الطبقہ شہر مکمل طور داعش سے آزاد کرالیا، شامی کرد فورسز

  

دمشق(این این آئی)شام میں سیریئن ڈیمو کریٹک فورسز (ایس ڈی ایف) کے ترجمان طلال سلو نے تصدیق کی ہے کہ شام کے شہر الطبقہ کو داعش تنظیم سے مکمل طور پر آزاد کرا کر اس کا کنٹرول حاصل کر لیا گیا ہے۔ میڈیارپورٹس کے مطابق شام میں انسانی حقوق کے مانیٹرنگ گروپ نے بتایاکہ واشنگٹن کے حمایت یافتہ کرد اور عرب جنگجو گروپوں پر مشتمل ایس ڈی ایف نے اتوار کے روز شہر کے 70 % سے زیادہ حصے پر کنٹرول حاصل کر لیا تھا۔الطبقہ شہر جس پر 2014 سے داعش تنظیم کا قبضہ رہا ہے ، دْہری تزویراتی اہمیت کا حامل ہے۔ ایک طرف یہ ایس ڈی ایف کے لیے شام میں داعش کے گڑھ الرقہ شہر کی جانب راستہ کھولتا ہے دوسری طرف یہاں ملک کا سب سے بڑا ڈیم بھی واقع ہے۔ ۔ الطبقہ شہر داعش کے گڑھ الرقہ سے 55 کلو میٹر مغرب میں واقع ہے۔ایس ڈی ایف کو داعش تنظیم کے جنگجوؤں کی جانب سے شدید مزاحمت کا سامنا ہے جو مسلح جاسوس طیاروں کا استعمال کر رہے ہیں جس طرح موصل میں عراقی فوج کے خلاف کرتے رہے ہیں۔شامی مانیٹرنگ گروپ کے مطابق داعش تنظیم نے شہر کے محاصرے کے وقت سے ہی سیریئن ڈیموکریٹک فورسز کے ٹھکانوں پر خودکش بمباروں اور گولہ بارود سے بھری گاڑیاں بھیجنے کی پالیسی پر انحصار کیا۔ داعش یہ طریقہ کار ہر اس محاذ پر اپناتی ہے جہاں اس کو بڑے خسارے کا اندیشہ ہوتا ہے۔الطبقہ شہر پر کنٹرول اْس آپریشن کے سلسلے کی کڑی ہے جو ایس ڈی ایف نے الرقہ سے داعش کو نکال دینے کے لیے بین الاقوامی اتحاد کی سپورٹ سے نومبر 2016 میں شروع کیا تھا۔

مزید :

عالمی منظر -