زرداری کا سندھ بھر کے دوروں کا فیصلہ، پارٹی رہنما ؤں کو بھی انتخابات 2018ء کی تیاری کا حکم

زرداری کا سندھ بھر کے دوروں کا فیصلہ، پارٹی رہنما ؤں کو بھی انتخابات 2018ء کی ...

  

کراچی (آن لائن) پاکستان پیپلزپارٹی کے شریک چیئرمین و سابق صدر مملکت آصف علی زرداری نے سندھ کے تمام اضلاع کے دوروں کا اعلان کر دیا جبکہ منتخب نمائندوں اور پارٹی رہنماؤں کو 2018 کے انتخابات کی تیاری کا حکم دیتے ہوئے توقع ظاہر کی ہے کہ اس میں فتح جمہوریت کی ہو گی اور صدر ، وزیر اعظم جیالے ہی بنیں گے ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز سندھ کے رکن صوبائی احمد علی پتافی سے گفتگو میں کیا جس نے سابق صدر سے یہاں ملاقات کی ۔ ملاقات میں گھوٹکی کی سیاسی صورت حال سمیت صوبہ سندھ کی مجموعی صورت حال پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا ۔ سابق صدر نے کہا کہ پیپلزپارٹی عوام کی نمائندہ جماعت ہے جس میں ہر مکتبہ فکر سے تعلق رکھنے والے لوگ شامل ہیں اور نوجوان ہماری قوت ہیں ۔ 2018 کے عام انتخابات کا وقت قریب ہے اس لئے میں سندھ کے تمام اضلاع کے دورے کروں گا اور پرانے ساتھیوں سمیت جیالوں کو ساتھ لے کر چلیں گے ۔منتخب نمائندے اور پارٹی رہنما بھی اپنی تیاری شروع کر دیں تاکہ عام انتخابات میں کامیابی حاصل کر کے حقیقی معنوں میں جمہوری اور عوام کی نمائندہ حکومت بنا سکیں۔ انہوں نے کہاکہ 2018 کے انتخابات میں فتح جمہوریت کی ہو گی ہم نے قربانیاں دے کر جمہوریت کی جڑیں مضبوط کی ہیں اب کوئی ان جڑوں کو اکھاڑنے کی جرات نہیں کر سکتا ۔ ہم پرامید ہیں کہ مستقبل میں صدر اور وزیر اعظم جیالے ہی بنیں گے اور انشاء اللہ عوام کو ان کے حقوق دلا کر حقیقی معنوں میں سماجی انقلاب برپا کریں گے ۔

زرداری

اسلام آباد(این این آئی) سابق صدر آصف علی زرداری نے انٹرنیشنل پریس فریڈم ڈے پر اپنے پیغام میں کہا ہے کہ تسلسل کے ساتھ نظریات اور نیشنل سکیورٹی کے نام پر اظہار رائے کی آزادی ختم کی جا رہی ہے اور دوسری جانب میڈیا کے لوگوں کے خلاف جرائم میں اضافہ ہوتا جا رہا ہے۔ پاکستان پیپلزپارٹی صحافیوں کی جدوجہد میں دو مقاصد کے حصول کے لئے ان کے شانہ بشانہ کھڑی ہے۔ ایک مقصد تو اظہار رائے کی آزادی ہے اور دوسرا مقصد صحافیوں کے خلاف جرائم کا خاتمہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ اظہار رائے کی آزادی اور کثیر الجہتی آئیڈیاز حقیقی جمہوریت کیلئے ضروری ہیں تاکہ معاشرہ پھل پھول سکے۔ بدقسمتی ہے کہ اظہار رائے کی آزادی پر ریاست کی طرف سے نیشنل سکیورٹی کے نام اور غیرریاستی عناصر کی طرف سے نظریات کے نام پر حملوں میں تیزی آرہی ہے۔ نائن الیون کے بعد کے چیلنجوں میں یہ ایک بڑا چیلنج ہے اور اس سے نمٹنا بہت ضروری ہے۔ اطلاعات اور آئیڈیاز کے آسانی کے ساتھ بہاؤسے شہری بااختیار ہوتے ہیں اور جب اطلاعات تک رسائی کی راہ میں رکاوٹیں ہوتی ہیں تو شہری بے اختیار ہو جاتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ انہیں اس بات پر سخت تشویش ہے کہ رائٹ آف انفارمیشن کا قانون پارلیمنٹ کے سامنے پیش نہیں کیا گیا۔ پریس فریڈم کے عالمی دن کے موقع پر وہ حکومت سے مطالبہ کرتے ہیں کہ اطلاعات تک رسائی کے حق کو یقینی بنانے کے لئے وہ متفقہ قانون فوری طور پر پارلیمنٹ میں لایا جائے۔ سابق صدر نے ریاست کے تمام اداروں سے اپیل کی کہ صحافیوں کے خلاف جرائم کے مرتکب افراد کو انصاف کے کٹہرے میں لایا جائے اور ان کے تحفظ کے لئے میکنزم بنایا جائے۔ سابق صدر نے ان تمام صحافیوں کو خراج تحسین پیش کیا جنہوں نے مشکل اور خطرناک حالات میں اپنے فرائض کی انجام دہی بہادری اور دلیری کے ساتھ کی۔

آصف زرداری

مزید :

صفحہ اول -