حکومت کا ریاض پیر زادہ استعفٰیمنظور کرنے کی بجائے ، خدشات دور کرنیکا فیصلہ

حکومت کا ریاض پیر زادہ استعفٰیمنظور کرنے کی بجائے ، خدشات دور کرنیکا فیصلہ

  

اسلام آباد(سید گلزار ساقی سے) حکومت نے ریاض پیر زادہ کا استعفیٰ قبول کرنے کے بجائے اُن کے خدشات دور کرنے کا فیصلہ کر لیا ،وزارت بھی رہے گی اور (ن) لیگ میں بھی رہیں گے پارٹی یں چہ مگوئیاں،ریاض پیرزادہ کے پارٹی چھوڑنے کی افواہوں میں صداقت نہیں وہ پارٹی میں رہیں گے اور2018کا انتخاب لڑیں گے ، اُن کے پارٹی چھوڑنے سے مسلم لیگ(ن) سرائیکی حلقوں کے صوبائی اور قومی اسمبلی کے منتخب شدہ ممبران اسمبلی سے اور آئندہ مضبوط امیدواروں سے محروم ہو سکتی ہے ، تفصیلات کے مطابق وفاقی وزیر برائے کھیل ریاض حسین پیر زادہ نے وزیر اعظم کو چند دن قبل اپنی وزارت کا استعفیٰ دے دیا تھا وزارت چھوڑنے کے پیچھے اُن کی وزارت میں حکومتی مشینری چلانے والے ایک شخص کی طرف سے مسلسل مداخلت کی بناء پر اور سپورٹس بورڈ کے آفیسر کو 3 ماہ کیلئے ریاض پیر زادہ سے مشاورت کئے بغیر معطل کرنے پر انہوں نے وزارت چھوڑتے ہوئے استعفیٰ وزیر اعظم کو بھجوا دیا تھا جو کہ تاحال انہوں نے منظور نہیں کیا ادھر ن لیگ کے حکومتی اور پارتی کے اندر چہ مگوئیاں ہو رہی ہیں کہ سرائیکی علاقے ضلع بہاولپور کی تحصیل حاصل پور میں ریاض پیرزادہ اور ان کا خاندان مضبوط حیثیت رکھتے ہیں ریاض پیرزادہ جب سے انتخابات میں حصہ لے رہے ہیں وہ کبھی شکست زدہ نہیں ہوئے وہ8مرتبہ ممبراسمبلی کے ممبر منتخب ہوچکے ہیں اور وزرتیں بھی چلا چکے ہیں ان کے خاندان یعنی اُن کے سگے بھانجے کاظم حسین پیرزادہ ایم پی اے ہیں جبکہ اُن کے بھائی سجاد پیرزادہ اور ریاض پیرزادہ کے بیٹے علی رضا پیرزادہ اور اُن کے بھتیجے علاقے میں خدمات سر انجام دیتے ہوئے ریاض پیر زادہ کے بازو بنے ہوئے ہیں حلقے کی عوام ریاض پیرزادہ پر مطمئن ہیں علاوہ ازیں ریاض حسین پیرزادہ کا دامن صاف شفاف ہے وہ عوامی طرز کے سیاستدان ہیں ،ادھر پارٹی کے بعض اہم رہنماؤں نے کا کہنا ہے کہ ریاض حسین پیرزادہ جیسے دبنگ سیاستدان کی مسلم لیگ(ن) کی ضرورت ہے اور پارٹی کیلئے ایک اثاثہ ہے،ذرائع کا کہنا ہے کہ پارٹی کی اعلیٰ قیادت ریاض پیرزادہ کا استعفیٰ قبول کرنے کی بجائے اُن کو پارٹی اور حکومت کیلئے کام کرنے کیلئے راضی کریگی ادھر ریاض پیر زادہ کے قریبی ذرائع کا کہنا ہے کہ وہ پارٹی میں ہی ہیں اور آئندہ الیکشن بھی مسلم لیگ(ن) کے پلیٹ فارم سے ہی لڑیں گے، اُن کی پارٹی چھوڑنے کی افواہیں جھوٹ پر مبنی ہیں اور نہ ہی وہ پارٹی چھوڑیں گے۔

مزید :

کراچی صفحہ اول -