نظریات ، نیشنل سکیورٹی کے نام پر اظہار رائے کی آزادی ختم کی جا رہی ہے : آصف زرداری

نظریات ، نیشنل سکیورٹی کے نام پر اظہار رائے کی آزادی ختم کی جا رہی ہے : آصف ...

  

اسلام آباد(این این آئی) سابق صدر آصف علی زرداری نے انٹرنیشنل پریس فریڈم ڈے پر اپنے پیغام میں کہا ہے کہ تسلسل کے ساتھ نظریات اور نیشنل سکیورٹی کے نام پر اظہار رائے کی آزادی ختم کی جا رہی ہے اور دوسری جانب میڈیا کے لوگوں کے خلاف جرائم میں اضافہ ہوتا جا رہا ہے۔ پاکستان پیپلزپارٹی صحافیوں کی جدوجہد میں دو مقاصد کے حصول کے لئے ان کے شانہ بشانہ کھڑی ہے۔ ایک مقصد تو اظہار رائے کی آزادی ہے اور دوسرا مقصد صحافیوں کے خلاف جرائم کا خاتمہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ اظہار رائے کی آزادی اور کثیر الجہتی آئیڈیاز حقیقی جمہوریت کیلئے ضروری ہیں تاکہ معاشرہ پھل پھول سکے۔ بدقسمتی ہے کہ اظہار رائے کی آزادی پر ریاست کی طرف سے نیشنل سکیورٹی کے نام اور غیرریاستی عناصر کی طرف سے نظریات کے نام پر حملوں میں تیزی آرہی ہے۔ نائن الیون کے بعد کے چیلنجوں میں یہ ایک بڑا چیلنج ہے اور اس سے نمٹنا بہت ضروری ہے۔ اطلاعات اور آئیڈیاز کے آسانی کے ساتھ بہاؤسے شہری بااختیار ہوتے ہیں اور جب اطلاعات تک رسائی کی راہ میں رکاوٹیں ہوتی ہیں تو شہری بے اختیار ہو جاتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ انہیں اس بات پر سخت تشویش ہے کہ رائٹ آف انفارمیشن کا قانون پارلیمنٹ کے سامنے پیش نہیں کیا گیا۔ پریس فریڈم کے عالمی دن کے موقع پر وہ حکومت سے مطالبہ کرتے ہیں کہ اطلاعات تک رسائی کے حق کو یقینی بنانے کے لئے وہ متفقہ قانون فوری طور پر پارلیمنٹ میں لایا جائے۔ سابق صدر نے ریاست کے تمام اداروں سے اپیل کی کہ صحافیوں کے خلاف جرائم کے مرتکب افراد کو انصاف کے کٹہرے میں لایا جائے اور ان کے تحفظ کے لئے میکنزم بنایا جائے۔ سابق صدر نے ان تمام صحافیوں کو خراج تحسین پیش کیا جنہوں نے مشکل اور خطرناک حالات میں اپنے فرائض کی انجام دہی بہادری اور دلیری کے ساتھ کی۔

مزید :

کراچی صفحہ اول -