آصفہ میڈیکل کالج لاڑکانہ کی رجسٹریشن کا معاملہ حل ہوگیا،سکندرمیندھرو

آصفہ میڈیکل کالج لاڑکانہ کی رجسٹریشن کا معاملہ حل ہوگیا،سکندرمیندھرو

  

کراچی ( اسٹاف رپورٹر ) صوبائی وزیر صحت ڈاکٹر سکندر میندھرو نے کہا ہے کہ آصفہ میڈیکل کالج لاڑکانہ کے پی ایم ڈی سی سے رجسٹریشن کا معاملہ حل ہو چکا ہے اور طلباء کو ڈگریاں بھی جاری کر دی گئی ہیں ۔ اب ان طلباء کی صرف پی ایم ڈی سی میں رجسٹریشن کا معاملہ باقی ہے ۔ یہ بھی جلد حل ہ وجائے گا ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے منگل کو سندھ اسمبلی کے اجلاس میں قائد حزب اختلاف خواجہ اظہار الحسن نے نکتہ اعتراض پر جواب دیتے ہوئے کیا ۔ خواجہ اظہار الحسن نے کہا کہ آصفہ میڈیکل کالج لاڑکانہ کے طلباء اس وقت سخت پریشان ہیں کیونکہ ابھی تک پی ایم ڈی سی میں اس ادارے کا رجسٹریشن نہیں ہوا ہے اور بچے اپنے مستقبل کے حوالے سے خوف زدہ ہیں ۔ ڈاکٹر سکندر میندھرو نے کہا کہ یہ طلباء و طالبات حالیہ دنوں احتجاج کے لیے کراچی آئے تھے ۔ مجھے معلوم ہے اور ہم نے ان سے بات بھی کی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ہم ادارے بچوں کی بہتری اور لوگوں کی سہولت کے لیے کھولتے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ آصفہ میڈیکل کالج لاڑکانہ کا معاملہ بعض قانونی تقاضوں کی وجہ سے کچھ تاخیر کا شکار ہوا تھا ۔ پی ایم ڈی سی کی ٹیم نے مختلف مواقع پر مختلف معاملات کی نشاندہی کی اور ہم نے ان کو پورا کیا اور اب اس ادارے کی رجسٹریشن مکمل ہو چکی ہے ۔ بچوں کو ان کی ڈگریاں بھی جاری کر دی گئی ہیں تاہم ان کے ڈاکٹر بننے کے حوالے سے پی ایم ڈی سی کے ایک اجازت نامے کی ضرورت ہوتی ہے ، جس کا اجراء ہونا ابھی باقی ہے ۔ انشاء اللہ جلد یہ معاملہ حل ہو جائے گا ۔ ہم اس بات پر غور کر رہے ہیں کہ اپنے صوبے میں پی ایم ڈی سی طرز کا ایک رجسٹریشن کا ادارہ قائم کریں ۔ مگر کچھ قانونی مجبوریاں ہیں ۔

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -