رجسٹری برانچ ملتان کینٹ 700سے زائد رجسٹریوں کا ریکارڈ غائب

رجسٹری برانچ ملتان کینٹ 700سے زائد رجسٹریوں کا ریکارڈ غائب

  

ملتان( نمائندہ خصوصی ) رجسٹری برانچ ملتان کینٹ سے 700 سے زائد(بقیہ نمبر11صفحہ12پر )

رجسٹریوں کا ریکارڈ غائب ہوگیاہے‘ 6 ماہ سے زائد کا عرصہ گزرنے کے باوجود 700 سے زائد اراضی مالکان کا ریکارڈ نہیں مل سکا ‘ ممبر ٹیکسز امجد اسلام مانی نے سرکاری ریکارڈ کی گمشدگی کا نوٹس لے لیا اور ذمہ دار سب رجسٹراروں کیخلاف مقدمات درج کرانے کا عندیہ دیدیا ہے ۔ معلوم ہوا ہے 2015 تا 2018 تک رجسٹری برانچ ملتان کینٹ میں 3 سب رجسٹراروں نے فرائض سر انجام دیئے ہیں ان سب رجسٹراروں کے دور میں بے تحاشہ ٹیکس غبن کیا گیا ‘ اپنی کرپشن کو چھپانے کیلئے سب رجسٹراروں نے رجسٹریوں کا سرکاری ریکارڈ ہی غائب کرا دیا تاکہ آڈٹ ٹیم کی نطر میں نہ آسکے ۔ تین سال تک بورڈ آف ریونیو کے آڈیٹرز کی ملی بھگت سے اس کرپشن کی پردہ داری کی گئی ‘ لیکن موجودہ آڈیٹر نے اپنی رپورٹ میں 700 سے زائد سرکاری رجسٹریوں کی گمشدگی کا پول کھول دیا ہے جس کا ممبر ٹیکسز نے سخت نوٹس لیا ‘ ممبر ٹیکسز امجد اسلام مانی نے گمشدہ رجسٹریوں کی تلاش کا حکم جاری کیا جس پر رجسٹری برانچ ملتان کینٹ کے سب رجسٹراروں نے سنجیدہ نہ لیا ‘ اب بورڈ آف ریونیو کے ممبر ٹیکس نے 2015تا2018 تک تعینات سب رجسٹراروہں سے بازپرس کے بعد ریکارڈ گمشدگی کی ایف آئی آر درج کرانے کا عندیہ دیا ہے جس میں سب رجسٹراروں کو مرکزی ملزم رکھا جائیگا ۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -