اسحاق ڈار اثاثہ جات ضمنی ریفرنس، استغاثہ گواہ شیر دل خان کا بیان قلمبند، جرح مکمل

اسحاق ڈار اثاثہ جات ضمنی ریفرنس، استغاثہ گواہ شیر دل خان کا بیان قلمبند، جرح ...

  

اسلام آباد(سٹاف رپورٹر،مانیٹرنگ ڈیسک ، نیوز ایجنسیاں ) سابق وزیر خزانہ اسحاق ڈار اور شریک ملزمان کیخلاف اثاثہ جات ضمنی ریفرنس کی سماعت کے دوران استغاثہ کے گواہ شیر دل خان کا بیان قلمبند کرلیا گیا، گواہ نے بتایا ا سحاق ڈار کو 4سال میں تنخواہ اور الانسز کی مد میں 7 لاکھ 26ہزار 640روپے ادا کیے گئے، نیب نے دستاویزات وصول کرکے ان سے ایک میمو پر دستخط بھی لیے۔ بدھ کو احتساب عدالت کے جج محمد بشیر نے نیب ریفرنس پر سماعت کی، دوران سماعت استغاثہ کے گواہ ڈائریکٹر جنرل فنانس شیر دل خان عدالت میں پیش ہوئے اور بیان ریکارڈ کرواتے ہوئے بتایا وہ 22اگست 2017کو نیب لاہور میں تفتیشی افسرکے روبرو پیش ہوئے اور 1993سے 1996تک اسحاق ڈار کے سیلری اور الانسز کا ریکارڈ پیش کیا،جس کے مطابق انہیں4سال میں تنخواہ اور الانسز کی مد میں 7لاکھ 26ہزار 640روپے اد ا کیے گئے، نیب نے دستاویزات وصول کرکے ان سے ایک میمو پر دستخط بھی لیے۔بعد ازاں وکیل صفائی قاضی مصباح نے گواہ شیر دل خان پر جرح مکمل کی۔دوسری جانب گواہ محمد عظیم پر جرح نہ ہوسکی، جن کے مرکزی ریفرنس میں ریکارڈ کرائے گئے بیان کو ہی گزشتہ سماعت پر ضمنی ریفرنس کا حصہ بنایا گیا تھا۔اسحاق ڈار اور ضمنی ریفرنس میں نامزد تینوں ملزمان کیخلاف سماعت 9مئی تک کیلئے ملتوی کردی گئی۔

اسحاق ڈار ریفرنس

مزید :

صفحہ آخر -