جندول ،تحصیل ثمر باغ میں بجلی بندش کیخلاف احتجاجی مظاہرہ

جندول ،تحصیل ثمر باغ میں بجلی بندش کیخلاف احتجاجی مظاہرہ

  

جندول(نمائندہ پاکستان) جندول تحصیل ثمرباغ میں بجلی بندش ، یونین کونسلوں کے مابین بجلی کے انوکھے نمبر پر تقسیم اور مسلسل کم وولٹیج کے ستائے ہوئے عوام نے بازار ثمرباغ میں تنظیم تاجرین جندول کے صدر ڈاکٹر سربلند خان کی سربراہی میں عظیم الشان احتجاجی مظاہرہ کیا۔ مظاہرین نے کمپلیکس ثمرباغ سے پورے بازار میں احتجاجی واک کیا اور اس دوران منتخب ممبران اسمبلی سینیٹر سراج الحق اور ایم این اے صاحبزادہ یعقوب خان ، واپڈاء اور حکومت کے خلاف سخت نعرہ بازی کی ۔مظاہرین نے ڈاکخانہ کے سامنے احتجاجاََ مین روڈ بلاک کر کے دھرنہ دیا ۔ مظاہرین سے ڈاکٹر سربلند خان،پیپلز پارٹی کے متوقع کنڈیٹPK16محمد اقبال ، حاجی عنایت خان، سماجی کارکن و تاجر رہنماء سلیم خان،چیئرمین دوست رحمان، ، و دیگر نے خطاب کیا۔مقررین نے کہا کہ سینیٹر سراج الحق کراچی میں لوڈشیڈنگ کے خلاف احتجاج کرتے مگر اپنے علاقہ سے بے خبر ہیں انہوں نے کہا کہ جماعت اسلامی کے منتخب ممبران نے بجلی کی بحالی پر عوام سے ووٹ لیا تھا لیکن پانچ سال گذرنے کے بعد گریڈ سٹیشن اور ایکسپریس لائن کی تعمیر پر عوام کو صرف ورغلایا گیا اور کوئی عملی کام نہ ہوا انہوں نے کہا کہ انتخابات جیت کر منتخب ممبران نے عوام کو بے یار ومدد گار چھوڑ دیا ہے اور واپس پلٹ کر نہیں دیکھتے ۔مقررین نے کہا کہ بجلی بندش کی وجہ سے علاقہ کے ٹیوب ویل غیر فعال ہو گئیں ہیں جس کی وجہ سے گھروں مساجد تعلیمی و دیگر اداروں میں لوگ پانی کی بوند بوند کو ترس رہے ہیں ۔ مظاہرین نے منتخب ممبران اسمبلی اور واپڈاء کے ذمہ داران کو ایک ہفتے کا الٹی میٹم دیتے ہوئے متنبہ کیا کہ اگر جلد از جلد تحصیل ثمرباغ کی بجلی بحالی اور مسائل خاتمہ کیلئے نتیجہ خیز اقدامات نہ اٹھائے گئیں تو عوام کو نکال کر کھمبے اکھاڑ دینگے اور واپڈاء کے دفاتر کو تالیں لگا کر بند کر دینگے اور کسی قسم کے نقصان کی ذمہ داری حکومت منتخب ممبران اور واپڈاء حکام پر ہوگی۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -