رانا ثنااللہ اور عابد شیر علی کے نازیبا بیانات کے بعد ایک اور فیصل آبادی سیاستدان میدان میں آگیا، خواتین پر سر عام تشدد، سڑکوں پر گھسیٹتا رہا، یہ ن لیگ کے کون سے عہدے پر فائز ہے ؟ انتہائی شرمناک خبر آگئی

رانا ثنااللہ اور عابد شیر علی کے نازیبا بیانات کے بعد ایک اور فیصل آبادی ...
رانا ثنااللہ اور عابد شیر علی کے نازیبا بیانات کے بعد ایک اور فیصل آبادی سیاستدان میدان میں آگیا، خواتین پر سر عام تشدد، سڑکوں پر گھسیٹتا رہا، یہ ن لیگ کے کون سے عہدے پر فائز ہے ؟ انتہائی شرمناک خبر آگئی

  

فیصل آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) خواتین کے بارے میں قابل اعتراض بیانات سے لے کر سر عام تشدد تک، فیصل آباد کے ن لیگی سیاستدان گزشتہ کئی روز سے خبروں میں چھائے ہوئے ہیں۔ پہلے عابد شیر علی نے شیریں مزاری کے خلاف نازیبا بیان دیا جس کے بعد رانا ثنا اللہ تحریک انصاف کی خواتین کے بارے میں اخلاق سے عاری گفتگو کرتے نظر آئے اور اب ایک لیگی وائس چیئرمین نے خواتین کو نہ صرف سرِ بازار تشدد کا نشانہ بنایا بلکہ انہیں سڑکوں پر گھسیٹتا رہا۔

رانا ثنا اللہ نے نازیبا زبان استعمال کرنے میں اخلاقی حدیں توڑ دیں،تحریک انصاف کی خواتین کے بارے میں ایسی بات کہہ دی کہ آپ کے بھی غصے کی انتہا نہ رہے گی 

یہ افسوسناک واقعہ فیصل آباد کی ریلوے کالونی میں پیش آیا جہاں مسلم لیگ ن سے تعلق رکھنے والے یوسی وائس چیئرمین عرفان اشرف نے ایک مکان پر قبضہ کرنے کی کوشش کی اور اپنے ساتھیوں سمیت اہلخانہ پر حملہ کردیا۔ عرفان اشرف اور اس کے ساتھیوں نے نہ صرف گھر کے مردوں کو تشدد کا نشانہ بنایا بلکہ خواتین کو بھی سر بازار مارتے رہے اور سڑکوں پر گھسیٹتے رہے۔ افسوسناک واقعے کا سب سے شرمناک پہلو یہ بھی ہے کہ جس وقت خواتین پر تشدد کیا جارہا تھا تب پولیس بھی موقع پر ہی موجود تھی لیکن انہوں نے کوئی دخل اندازی نہیں کی۔

”تیرے پاس ٹچ کرنے کیلئے ہے ہی کیا؟“ عابد شیر علی نے جلسے میں شیریں مزاری اور مراد سعید کیخلاف انتہائی شرمناک باتیں کہہ دیں، ویڈیو نے سوشل میڈیا پر ہنگامہ برپا کر دیا

واقعے کی ویڈیو منظر عام پر آئی تو پولیس حرکت میں آئی اور تھانہ پیپلز کالونی میں ملزمان کے خلاف مقدمہ درج کرلیا گیا۔ پولیس کا کہنا ہے کہ واقعہ میں ملوث 27 مرد اور 6 خواتین گرفتار کی جاچکی ہیں جبکہ مرکزی ملزم عرفان اشرف نے 11 مئی تک کیلئے ضمانت حاصل کرلی ہے۔

مزید :

Breaking News -اہم خبریں -جرم و انصاف -علاقائی -پنجاب -فیصل آباد -