نریندر مودی کا تاجر دوست متحدہ عرب امارات میں تاریخی فراڈ کر کے بھارت فرار

نریندر مودی کا تاجر دوست متحدہ عرب امارات میں تاریخی فراڈ کر کے بھارت فرار

  

ابوظہبی(مانیٹرنگ ڈیسک)بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی کے دوست بزنس مین باواگتھو رگھورام شیٹی (بی آر شیٹی) متحدہ عرب امارات کی تاریخ کا سب سے بڑا فراڈ کر کے بھارت فرار ہوگئے۔بھارتی بزنس مین فروری میں بھائی کے علاج کی غرض سے ابوظہبی سے بنگلور پہنچے تھے جہاں ان کے بھائی دوران علاج چل بسے تھے جس کے بعد وہ واپس امارات نہیں گئے ہیں اور اس دوران ہی ان کے فراڈ کا بھانڈہ پھوٹا۔بی آر شیٹی نے این ایم سی اسپتال کے نام سے 80 مختلف بین الاقوامی اور اماراتی بینکوں سے تقریباً 3 ارب ڈالرکا قرضہ لیا تھا اور اب بھی ہسپتال پر 2 ارب ڈالر کے بقایا جات ہیں۔بھارتی بزنس مین نے جعلی دستاویزات، فرضی کمپنیوں، جعلی بینک اکاؤنٹس اور دیگر دستاویزات پیش کرکے اماراتی بینکوں سے اربوں روپے کا قرضہ حاصل کیا تھا۔شیٹی کے فرار کے بعد ہسپتال کو قرض دینے والے بینکس بھی مشکلات کا شکار ہوگئے ہیں جبکہ ہسپتال کیلئے قرض چکانا بھی مشکل ہوگیا ہے۔بی آر شیٹی نریندر مودی کے دوستوں میں سے ہیں اور یہ بھارتی حکومت کی موجودہ کشمیر پالیسی میں پیش پیش تھے۔دوسری جانب متحدہ عرب امارات میں مفروربھارتی بزنس مین بی آرشیٹی کیخلاف قانونی کارروائی جاری ہے اور ان کے تمام بینک اکاؤنٹس منجمد کرتے ہوئے ان کی کمپنیوں کو بلیک لسٹ کردیا گیا۔اماراتی سینٹرل بینک نے حکم نامے میں بی آر شیٹی کے خاندان کے افراد کے بھی اکاؤنٹس منجمد کرنے کا کہا ہے۔اْدھر بھارتی بزنس مین بی آر شیٹی نے اپنے اور کمپنی پر لگے الزامات کو جھوٹ قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ میں نے دھوکہ نہیں کیا بلکہ میرے ساتھ دھوکہ ہوا ہے۔انہوں نے کہا کہ میری تحقیقات میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ میرے نام پر کئی جعلی بینک اکاؤنٹس میں پیسوں کی منتقلی اور دیگر امور انجام دئیے گئے اور ساتھ ہی میرے جعلی دستخط استعمال کیے گئے ہیں جس کا مجھے علم ہی نہیں ہے۔

بھارتی تاجر

مزید :

صفحہ اول -