پاکستانی شہری کی غیر ملکی بیوی سے پیدا کمسن بچوں کی شہریت پاکستانی ہوگی:لاہور ہائیکورٹ

پاکستانی شہری کی غیر ملکی بیوی سے پیدا کمسن بچوں کی شہریت پاکستانی ...

  

لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہورہائی کورٹ نے قراردیاہے کہ بچوں کی تحویل کے معاملے میں باپ اگر پاکستانی شہری ہو گا تو اس کے کمسن بچوں کی شہریت بھی پاکستانی ہی تصور کی جائے گی، مسٹر جسٹس طارق سلیم شیخ نے یہ آبزرویشن جنوبی افریقہ کی خاتون کی بچوں کی پاکستانی باپ سے بازیابی سے متعلق درخواست نمٹاتے ہوئے دی ہے،فاضل جج نے اس کیس کا 23صفحات پر مشتمل اپنا تحریری فیصلہ جاری کردیاہے، جنوبی افریقہ کی خاتون سمیعہ موسس نے اپنے دو بچوں کی بازیابی کے لئے درخواست دائر کی تھی،فاضل جج نے اپنے تحریری حکم میں ہدایت کی ہے کہ درخواست گزار خاتون اپنے کمسن بچوں کی تحویل کے لئے پاکستان کی گارڈین عدالت سے رجوع کرے،عدالت نے قراردیا کہ بچوں کی تحویل کے معاملے میں باپ اگر پاکستانی شہری ہو گا تو اس کے کمسن بچوں کی شہریت بھی پاکستانی ہی تصور کی جائے گی، پاکستانی شہری باپ کی کسی بھی ملک میں پیدا ہونے والی اولاد شہریت ایکٹ 1951 ء کے تحت پاکستانی شہری ہی تصورکی جائے گی،عدالت نے گارڈین عدالت کو عبدالحنان موسس اور ارشمان رضوان کی تحویل کی درخواست پر جلد فیصلہ کرنے کا بھی حکم دیا ہے،عدالت نے حکم دیا کہ درخواست گزار خاتون سمیعہ موسس گارڈین عدالت کی اجازت کے بغیر اپنے بچوں کو پاکستان سے باہر نہیں لے جا سکتی، عدالت نے بچوں کے باپ کو ہدایت کی کہ دونوں بچوں کی ہر اتوار کے دن ان کی ماں سے ملاقات کروائی جائے،فاضل جج کے اس فیصلے کو عدالتی نظیر بھی قرار دیا گیا ہے۔

بچے،شہریت

مزید :

صفحہ آخر -