مارکیٹوں اور چھوٹی انڈسٹری کو فوری کھولا جائے:لاہور چیمبر

  مارکیٹوں اور چھوٹی انڈسٹری کو فوری کھولا جائے:لاہور چیمبر

  

لاہور(کامرس ڈیسک)لاہور چیمبر کے زیر اہتمام ٹریڈرز مشاورتی کانفرنس میں 100سے زائد مارکیٹوں اور انجمن تاجران کے صدور و رہنماؤں نے متفقہ طور پر پرزور مطالبہ پیش کیا ہے کہ مارکیٹوں اور چھوٹی انڈسٹری کو فوری طور پر کھولا جائے کیونکہ لاک ڈاؤن اب ناقابل برداشت ہوچکا ہے۔ اگر حکومت نے 9مئی کے بعد لاک ڈاؤن کو مزید توسیع دینے کی کوشش کی تو تاجر از خود دکانیں کھول لیں گے کیونکہ اب وہ معاشی تباہی کے دہانے پر پہنچ چکے ہیں۔ لاہور چیمبر کے صدر عرفان اقبال شیخ نے اجلاس کی صدارت کی جبکہ سینئر نائب صدر علی حسام اصغر، نائب صدر میاں زاہد جاوید احمد،سابق صدر محمد علی میاں، مارکیٹوں اور انجمن تاجران کے عہدیداروں نے بھی اس موقع پر خطاب کیا۔ انہوں نے کہا کہ حکومت لاک ڈاؤن کا خاتمہ کرے وگرنہ 9مئی کے بعد تاجر از خود دکانیں کھولنے پر مجبور ہوجائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ امریکہ، اٹلی، سپین، جرمنی اور دیگر ممالک میں کرونا کی شدت کہیں زیادہ ہے وہاں حفاظتی اقدامات کے ساتھ کاروبار کھل رہے ہیں۔ یہاں بھی حکومت ایس او پیز اور حفاظتی اقدامات کے بعد 9مئی کے بعد کاروبار کھولنے کی اجازت دے۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ لاہور کی ہول سیل مارکیٹ اور دیگر مارکیٹوں کو کاروبار کرنے کی اجازت دی جائے اور اس کے ساتھ چھوٹی انڈسٹری کو بھی کام کرنے کی اجازت دی جائے۔تاجروں نے کہا کہ صنعتی و تجارتی شعبے میں پریشانی اور ذہنی دباؤ اپنے عروج پر ہے کیونکہ وہ طویل لاک ڈاؤن کی وجہ سے دیوالیہ پن کے دہانے پر کھڑے ہیں، حکومت حفاظتی اقدامات کے ساتھ تمام صنعتوں اور تجارتی شعبہ کو کام کرنے کی اجازت دے چاہے اوقات کار محدود رکھے جائیں، اگر فوری طور پر ایسا نہ کیا گیا تو لاء اینڈ آرڈر کی صورتحال بھی خراب ہوجائے گی۔ انہوں نے کہا کہ تاجروں ان کے پاس اب خرچ کرنے، یوٹیلٹی بلز اور تنخواہیں دینے کے لیے کچھ نہیں بچا۔ انہوں نے کہا کہ فوری طور پر مارکیٹوں اور چھوٹی انڈسٹری کو کھولا جائے کیونکہ یہی کام کرنے کا سیزن ہے، وگرنہ تاجروں کے معاشی حالات خدشات سے کہیں زیادہ خراب ہوجائیں گے اور وہ 9مئی کے بعد از خود مارکیٹیں کھولنے پر مجبور ہونگے۔ اجلاس سے لاہور چیمبر کے صدر عرفان اقبال شیخ، سینئر نائب صدر علی حسام اصغر، نائب صدر میاں زاہد جاوید احمد، خالد پرویز، اشرف بھٹی، محبوب علی سرکی، مجاہد مقصود بٹ، وقار احمد میاں، بابر محمود، حاجی محمد حنیف، ذیشان خلیل، طاہر منظور، ملک محمد خالد، خامس سعید بٹ، چوہدری فیاض، حاجی اشفاق، یونس بیگ، شیخ سجاد افضل، ذیشان سہیل ملک، خواجہ اعجاز احمد، اظہر اعوان، تنویر جٹ، لیاقت سیٹھی، عاصم انعام مگوں، جاوید بھٹی، چودھری عامر صدیق، محمد عاطف، چوہدری ریحان، رفعت علی سنی، شہزاد اقبال، خادم حسین، حاجی افضل، سلیم بٹ، فہیم الرحمٰن سہگل، ارشد خان، حارث عتیق، اورنگزیب اسلم، اکرم مہر، رانا نثار، شاہد اسلم اورملک خالد نے خطاب کیا۔

مزید :

کامرس -