غیر ملکی کمپنیوں کی جانب سے منافع جات کی منتقلی میں 4فیصد کمی

  غیر ملکی کمپنیوں کی جانب سے منافع جات کی منتقلی میں 4فیصد کمی

  

اسلام آباد (اے پی پی) رواں مالی سال کے دوران پاکستان میں کام کرنے والی غیر ملکی کمپنیوں کی جانب سے منافع جات کی منتقلی میں 4 فیصد کمی ہوئی ہے۔ سٹیٹ بینک آف پاکستان (ایس بی پی) کے اعداد وشمار کے مطابق جاری مالی سال کے ابتدائی 9 ماہ میں جولائی تا مارچ 2019-20ء کے دوران غیر ملکی سرمایہ کاروں نے 1.004 ارب ڈالر کے منافع جات کی منتقلی کی ہے جبکہ گزشتہ مالی سال میں جولائی تا مارچ 2018-19ء کے دوران غیر ملکی سرمایہ کاری سے حاصل ہونے والے 1.049 ارب ڈالر کے منافع جات کی منتقلی کی گئی ہے تھی۔ اس طرھ گزشتہ مالی سال کے مقابلہ میں رواں مالی سال کے دوران منافع جات کی منتقلی میں 4 فیصد کمی ریکارڈ کی گئی ہے۔ ایس بی پی کے مطابق رواں مالی سال میں سب سے زیادہ منافع جات تیل و گیس کے شعبہ سے منتقل کئے گئے ہیں جن کا حجم 203 ملین ڈالر رہا ہے اسی طرح دوسرے نمبر پر مالیات کے شعبہ سے 162 ملین ڈالر کی منتقلی کی گئی ہے۔ مزید برآں ٹرانسپورٹ تیسرا بڑا شعبہ رہا ہے جس سے 140 ملین ڈالر کے منافع جات کی منقتلی کی گئی ہے۔ رپورٹ کے مطابق مارچ 2020ء کے دوران 31 ملین ڈالر کے منافع جات کی بیرون ملک منتقلی کی گئی ہے جس سے براہ راست غیر ملکی سرمایہ کاری (ایف ڈی آئی) سے حاصل ہونے والا 25.5 ملین ڈالر اور فان پورٹ فولیو سرمایہ کاری (ایف پی آئی) سے حاصل ہونے والی 5.2 بلین ڈالر کے منافع جات وغیرہ شامل ہیں۔

مزید :

کامرس -