سرکاری گوداموں سے 15ارب 35کروڑ کی گندم غائب ہونے کا انکشاف

سرکاری گوداموں سے 15ارب 35کروڑ کی گندم غائب ہونے کا انکشاف

  

کراچی(سٹاف رپورٹر)قومی احتساب بیورو (نیب)نے انکشاف کیا ہے کہ سندھ کے سرکاری گوداموں سے 5 ارب 35 کروڑ 50 لاکھ روپے مالیت کی ایک لاکھ 64 ہزار 797 میٹرک ٹن غائب ہے۔نیب کی جانب سے جاری کردہ رپورٹ کے مطابق نیب سکھر نے لاڑکانہ، بے نظیر آباداور سکھر ڈویژن کے 9 اضلاع میں 15 ارب 85 کروڑ روپے مالیت کی سرکاری گندم میں خرد برد اور چوری کو پکڑنے کیلئے 9 مختلف انکوائری شروع کی گئیں تھیں۔انکوائری کے لیے علیحدہ علیحدہ ٹیموں نے جوڈیشل مجسٹریٹ کی نگرانی میں ان 9 اضلاع کے سرکاری گوداموں میں چھاپے مارے۔نیب کے مطابق چھاپوں کے دوران انکشاف سامنے آیا کہ 5 ارب 35 کروڑ 50 لاکھ روپے مالیت کی ایک لاکھ 64 ہزار 797 میٹرک ٹن غائب ہے۔گندم غائب ہونے کے معاملے میں محکمہ خوراک کے افسران سمیت دیگر ملزمان نے اعتراف جرم کرتے ہوئے پلی بارگین کے ذریعے 2 ارب 11 کروڑ 20 لاکھ روپے واپس کیے۔نیب نے بتایا کہ سکھر اور خیرپور کے محکمہ خوراک کے افسران اور 4 فلور مل مالکان کے خلاف ادھار پر لی گئی سرکاری گندم کی رقم 6 ماہ میں واپس نہ کرنے پر انکوائری کا آغاز ہوا تو 4 فلور مل مالکان نے 8 ارب 12 کروڑ 60 لاکھ روپے واپس کیے۔نیب کے مطابق مختلف انکوائری کے دوران یہ انکشاف بھی ہوا کہ سکھر، لاڑکانہ اور بے نظیر آباد ڈویژن کے 9 اضلاع سے کراچی بھجوائی گئی 74 کروڑ 56 لاکھ 80 ہزار روپے مالیت کی 22 میٹرک ٹن سرکاری گندم وہاں پہنچی ہی نہیں۔انسداد بدعنوانی ادارے

مزید :

صفحہ اول -