بلاول صاحب کورونا سے ڈرنا نہیں لڑنا ہے، خرم شیر زمان

  بلاول صاحب کورونا سے ڈرنا نہیں لڑنا ہے، خرم شیر زمان

  

کراچی(اسٹاف رپورٹر)پاکستان تحریک انصاف کراچی ڈویژن کے صدرخرم شیر زمان نے چیئرمین پیپلز پارٹی کو مخاطب کرتے ہوئے کہا ہے کہ بلاول صاحب! کورونا سے ڈرنا نہیں لڑنا ہے، 12 سال میں آپ کی جماعت نے کیا کیا؟ اربوں روپے وفاق این ایف سی کی مد میں آپ کو دے رہا ہے، بتایا جائے وہ پیسا کہاں گیا؟۔انصاف ہاؤس میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے تحریک انصاف کے رہنما خرم شیر زمان نے کہا کہ ہم پر الزام لگائے گئے کہ وفاق کوئی مدد نہیں کررہا، سندھ میں ناکامی کے ذمہ دار بلاول کے دائیں بائیں بیٹھے لوگ ہیں۔انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم عمران خان نے احساس پروگرام کے ذریعے پونے 27 ارب سندھ کے عوام کو دیئے۔خرم شیر زمان کے مطابق احساس پروگرام کے تحت مزدور طبقے کو 200 ارب کا ریلیف پیکیج دیا گیا، بجلی گیس کی صورت میں اربوں روپے کا ریلیف دیا گیا اور کسانوں اور زرعی شعبے کوبھی ریلیف دیا گیا۔انہوں نے کہا کہ جو مرتا ہے اسے کورونا میں ڈال دیا جاتا ہے۔ ہمیں مجبور نہ کریں،خدارا کوئی ایس او پیز بنادیں۔خرم شیر زمان نے کہا کہ سندھ حکومت کو وفاق کی طرف سے حفاظتی لباس کے علاوہ سینیٹائزرز، ماسک اور دیگر سامان فراہم کیا گیا۔ بلاول بھٹو 5 فیصد جائیداد بیچ کر غریب کی مدد کریں گے تو بھی کام ہو جائے گا۔انہوں نے کہا کہ گزشتہ روز ایک نابالغ چیئرمین نے غلط بیانی سے کام لیا اور الزام لگائے گئے کہ وفاق کوئی مدد نہیں کر رہا۔ وہ معصوم ہو کر وزیراعلی کے ساتھ بیٹھے تھے۔پی ٹی آئی رہنما نے کہا کہ سندھ میں ناکامی کے ذمہ دار بلاول بھٹو کے دائیں بائیں بیٹھے لوگ ہیں، ہم نے گزشتہ روز چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو کے چہرے پر شرمندگی دیکھی۔ بلاول بھٹو رونے جیسا چہرہ لے کر عوام سے خطاب کر رہے تھے۔انہوں نے کہا کہ 12سال میں پیپلز پارٹی نے کیا کیا؟ سندھ میں تو کتے کے کاٹنے کی ویکسین تک موجود نہیں ہے جبکہ بلاول بھٹو کی پھوپی وزیر صحت ہیں ان سے پوچھیں صوبے میں کیا کچھ ہو رہا ہے۔انہوں نے کہاکہ اربوں روپے کی گندم گوداموں سے غائب ہوگئی۔ انہوں نے کہا کہ ہم آپ پر تنقید صوبے کی بہتری کے لیے کرتے رہیں گے، آج سندھ کے عوام 18 ویں ترمیم سے جان چھڑانا چاہ رہے ہیں۔ 18ویں ترمیم کے ذریعے انہیں صرف پیسے دیتے جائیں۔خرم شیر زمان نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ سندھ حکومت نے صوبے کی بہتری کے لیے کچھ نہیں کیا اور صوبای حکومت صرف پریس کانفرنسز کر رہی ہے۔انہوں نے کہا کہ وفاق نے یوٹیلیٹی بلز اور اشیا ضروریہ پرعوام کو ریلیف دیا جبکہ وفاقی حکومت نے سندھ کو احساس پروگرام کے تحت خطیر رقم بھی دی۔

مزید :

صفحہ آخر -