شیخ القرآن مولانا عبدالرؤف مقامی قبرستان میں سپرد خاک

شیخ القرآن مولانا عبدالرؤف مقامی قبرستان میں سپرد خاک

  

کراچی (اسٹاف رپورٹر) جمعیت اتحاد العلماء سندھ کے صدر و جامع مسجد قباء فیڈرل بی ایریا کے پیش امام شیخ القرآن مولانا عبدالرؤف کی نماز جنازہ بعدنماز ظہر جامع مسجد قباء میں ان کے بڑے صاحبزادے مولانا عطاء اللہ کی امامت میں ادا کی گئی۔ جس میں سیاسی، سماجی، دینی رہنماؤں، علماء کرام، جماعت اسلامی کے قائدین اور اہل محلہ و قریبی رشتہ دار بڑی تعداد میں شریک تھے۔ بعد ازاں انہیں 36/B لانڈھی کے قبرستان میں سپرد خاک کیا گیا۔ نماز جنازہ جماعت اسلامی پاکستان کے مرکزی نائب امراء اسد اللہ بھٹو، راشد نسیم، ڈاکٹر معراج الہدیٰ، صوبائی امیر محمد حسین محنتی، جنرل سیکرٹری کاشف سعید شیخ، نائب امیر عبدالغفار عمر، جمعیت اتحاد العلماء سندھ کے قائم مقام صدر حافظ نصراللہ عزیز، کراچی کے ناظم اعلیٰ مولانا عبدالوحید، جماعت اسلامی کراچی کے امیر حافظ نعیم، نائب مرا ء ڈاکٹراسامہ رضی، برجیس احمد، مسلم پرویز، نائب قیم یونس بارائی، انجینئر عبدالعزیز، ضلعی امراء فاروق نعمت اللہ، محمد اسلام، عبدالجمیل خان، محمد یوسف، منعم ظفر،، محمد اسحاق خان، جے یو آئی کے قاری عثمان، مولانا نصیرالدین سواتی، اسمال ٹریڈرز کے صدر حامد محمود،سجاد حیدر دارا اور صوبائی سیکریٹری اطلاعات مجاہد چنا و دیگر شامل تھے۔ مولانا عبدالرؤف کچھ عرصے سے علیل تھے۔ مرحوم نے بھرپورر تحریکی زندگی گذاری لانڈھی سے بطور کونسلر عوام کی خدمت بعد ازاں مقامی ذمہ داری سے لیکر ضلع کے نائب امیر و آخری دن تک جمعیت اتحاد العلماء سندھ کے صدر کی حیثیت سے فرائض سر انجام دے رہے تھے۔ 07 بیٹے، 3 بیٹیاں سمیت بڑا حلقہ احباب سوگوار چھوڑا ہے۔ تمام بچے بچیاں جماعت اسلامی سے وابستہ، حافظ، عالم اور دعوت دین کے کام میں سرگرم عمل ہیں۔ وہ کئی دینی مدارس و اداروں کے سرپرست تھے۔ دین کے کام میں نوجوانوں کو آگے بڑھنے اور حوصلہ افزائی کرتے۔جامع مسجد قباء کے بطور پیش امام و خطیب ہر وقت لوگوں کو دین سے جوڑنے اصلاح معاشرہ اور انسانیت کی خدمت کا درس دیتے۔ ان کا اوڑھنا بچھونا قرآن کی دعوت کو عام اور انسانیت کی خدمت تھا۔دریں اثنا ء جماعت اسلامی حلقہ خواتین سندھ کی ناظمہ عطیہ نثار اور ان کی نائبین نے شیخ القرآن مولانا عبدالروف کی وفات پردلی دکھ و افسوس کا اظہار کیا ہے۔ #

مزید :

صفحہ آخر -