پی ٹی ایم کے رہنما عارف وزیر زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے چل بسے

پی ٹی ایم کے رہنما عارف وزیر زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے چل بسے
پی ٹی ایم کے رہنما عارف وزیر زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے چل بسے

  

اسلام آباد (ویب ڈیسک) گزشتہ شام قاتلانہ حملے میں زخمی ہونے والے پشتون تحفظ موومنٹ کے سرکردہ رہنما سردار عارف وزیر پمز ہسپتال اسلام آباد میں دم توڑ گئے،گزشتہ شام نامعلوم کار سواروں نے علی وزیر کے کزن کو فائرنگ کرکے شدید زخمی کردیا تھا۔

روزنامہ جنگ کے مطابق گزشتہ شام نامعلوم کار سواروں نے افطاری سے دس منٹ قبل ایم این اے علی وزیر کے کزن سردار عارف وزیر کو ان کے گھر کے قریب فائرنگ کرکے شدید زخمی کردیا تھا۔ ان کو طبی امداد کے لئے ڈی ایچ کیو وانا ہسپتال منتقل کیا گیا بعد میں انہیں ڈیرہ اسماعیل خان اور پمز ہسپتال اسلام آباد منتقل کیا گیا جہاں آپریشن کے دوران وہ انتقال کرگئے۔ مقامی ذرائع کے مطابق عارف وزیر سفید گاڑی سے نامعلوم افراد کی فائرنگ سے شدید زخمی ہوئے تھے۔

یاد رہے کہ سردار عارف وزیر 14 کے قریب ایف آئی آر میں مطلوب تھے اور کئی بار پشتون تحفظ موومنٹ کے جلسوں میں ریاست کے خلاف نازیبا الفاظ استعمال کرنے پر جیل جانا پڑا۔ اشرف غنی کے صدر منتخب ہونے پر عارف وزیر افغانستان بھی گئے تھے۔ عارف وزیر جنوبی وزیرستان وانا سے سابق صوبائی امیدوار بھی رہ چکے ہیں۔ ترجمان پمز ڈاکٹر وسیم خواجہ کا کہنا ہے کہ پمز ہسپتال میں عارف وزیر کا پوسٹ مارٹم مکمل کر لیا گیا ہے۔ عارف وزیر کے دماغ میں گولی لگنے سے ہلاکت ہوئی ہے۔ عارف وزیر گردوں کے عارضہ میں بھی مبتلا تھے۔

مزید :

علاقائی -اسلام آباد -