رمضان میں تلاوت قرآن اور نوافل کا اہتمام کیا جائے: حافظ نعیم الرحمن 

رمضان میں تلاوت قرآن اور نوافل کا اہتمام کیا جائے: حافظ نعیم الرحمن 

  

 کراچی (اسٹاف رپورٹر) حافظ نعیم الرحمن نے کہا کہ جماعت اسلامی غلبہ دین کی تحریک ہے۔ہم جو کام کررہے ہیں یہ انبیاء علیہ السلام کا کام ہے۔اس کام کو کرنے والوں کیلئے قرآن سے مضبوط تعلق اور اپنی دعوت اور بنیادی عقائد پر غیر متزلزل ایمان ضروری ہے۔اگر تحریک کے کارکنان کا فہم دین کمزور ہو اور بنیادی عبادات میں کمی ہو تو ایسے کارکن وقت کی مشکلات کے سامنے نہیں کھڑے ہوسکتے۔جماعت اسلامی میں کارکنان کی ذہنی و فکری تربیت کے لئے شب داری،درس قرآن و حدیث کی محفلیں منعقد کی جاتی ہے۔رمضان کی اس بابرکت ساعتوں میں زیادہ سے زیادہ تلاوت قرآن،نوافل و دیگر عبادات کا اہتمام کیا جائے اور اپنے رب کے ساتھ تعلق کو مضبوط بنایا جائے یہی رمضا ن کا پیغام ہے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے جماعت اسلامی ضلع کیماڑی کے تحت منعقد ہ شب بیداری سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ شب بیداری سے نائب امیرکراچی ڈاکٹر واسع شاکر،امیر ضلع کیماڑی مولانا فضل احدودیگر نے بھی خطاب کیا۔ڈاکٹر واسع شاکر نے فکر آخرت کے موضوع پر گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ انسان کی اصل زندگی موت کے بعد شروع ہوتی ہے،دنیا کی زندگی آزمائش کی مہلت ہے۔یہی وجہ ہے نبی کریم ؐکی زندگی اور قرآن میں میں جابجا موت کو یاد کرنے کا ذکر ملتا ہے۔دنیا کی زندگی اتنی ہی ہے کہ انسان اپنی انگلی سمندر میں ڈالے، جتنا پانی اس کی انگلی کے ساتھ لگ جائے وہ دنیا کی زندگی ہے جبکہ باقی رہ جانے والا سمندر آخرت کی زندگی ہے۔اس لیے ازلی زندگی کی تیاری کی ضرورت ہے۔اور اس تیاری کی دو صورتیں ہو سکتی ہے ایک موت کوکثرت سے یاد رکھا جائے اور دوسراہمیشہ کی زندگی کے لئے دنیامیں نیک اعمال کرنا۔مولانا فضل احد نے کہا کہ رمضان کے روزے انسان میں ثابت قدمی اورا طاعت کی خصوصیات پیدا کرتے ہیں اور اس مبارک ماہ کی راتیں اپنے اعمال کی جانچ کا بہترین موقع فراہم کرتی ہیں۔رمضان المبارک اپنے ساتھ رحمت،مغفرت اور جہنم سے نجات کا زبردست پیکج لے کر آتا ہے۔اور اللہ تعالیٰ انسان کی نیتوں کے مطابق اس پیکج کوستر سے سات سو فیصد تک بڑھا دیتا ہے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -