ایڈہاک بنیادوں پر ڈاکٹرز کی بھرتیاں ناانصافی،زبیر صدیقی

  ایڈہاک بنیادوں پر ڈاکٹرز کی بھرتیاں ناانصافی،زبیر صدیقی

  

  ملتان (وقائع نگار) ینگ  ڈاکٹر ریفارمز ایسوسی ایشن کے عہدیداروں نے اپنے مشترکہ بیان میں  کہا  ہے کے پاکستان میں بننے والے نئے 'آئی لائیو' وینٹیلیٹرز کا خیر مقدم کرتے ہیں۔ڈریپ (DRAP) کے سرٹیفیکیٹ کے ساتھ ساتھ ان وینٹیلیٹرز کا 'تھرڈ پارٹی اویلوایشن' بھی ضروری ہے-ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز روزنامہ پاکستان کی جانب منعقدہ فورم میں کیا۔صدر ینگ ڈاکٹرز ریفارمرز ایسوسی ایشن ڈاکٹر زبیر صدیقی اور چیئرمین(بقیہ نمبر50صفحہ6پر)

 ڈاکٹر شکیل چاچڑ نے کہا کہ پنجاب کے ڈسٹرکٹ ہیڈکوارٹر ہسپتالوں میں پہلے سے وینٹیلیٹرز موجود ہیں لیکن وہاں تربیت یافتہ اسٹاف کی شدید کمی ہے، ہسپتالوں میں تربیت یافتہ اسٹاف کے ساتھ ساتھ مستقل بنیادوں پہ ڈاکٹرز کی بھرتی وقت کی اہم ضرورت ہے۔ ایڈہاک بنیادوں پہ ڈاکٹرز کی بھرتی جہاں ڈاکٹرز کے ساتھ نا انصافی ہے وہیں ہسپتالوں میں بھی عملے کی کمی کا سامنا ہے۔ سیکرٹری ڈاکٹر سلمان لاشاری۔ڈاکٹر عمران کاظمی۔ڈاکٹر جنید ریاض۔اور ڈاکٹر عمران ثاقب نے فورم سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ کرونا کی تیسری لہر عروج پہ ہے جس کی وجہ سے ہسپتالوں میں مریضوں کے رش کا بہت زیادہ دبا ھے اور وینٹیلیٹرز اپنی آخری حد تک زیر استعمال ہیں لہذا جہاں نئے وینٹیلیٹرز کی فراہمی کو یقینی بنایا جائے وہیں مزید ڈاکٹرز، نرسز اور پیرا میڈیکس کے عملہ کو ایمرجنسی بنیادوں پر جلد از جلد تعینات کیا جائے -ڈاکٹر ناصر اقبال۔ڈاکٹر وسیم اختر۔ڈاکٹر زبیر رفیقی۔ڈاکٹر آصف حسین اور ڈاکٹر سعید احمد چوہدری نے کہا ہے کہ ہسپتالوں اور خاص طور پر کرونا میں ڈیوٹی سرانجام دینے والے عملے کو کرونا رسک الانس سے محروم رکھا گیا ہے اور اس موزی مرض کے خلاف جنگ میں شہید ہونے والے افراد کو شہید پیکج دینے میں تاخیری حربے استعمال کئے جارہے ہیں۔ یہ فرنٹ لائن ورکرز کے ساتھ ظلم ہے لہذا ڈاکٹرز کو اضافی بنیادی تنخواہ کی فراہمی یقینی بنانی چاہیے۔آخر میں عوام سے بھی درخواست ہے کہ وہ جہاں کرونا وائرس سے نہ صرف بچا کی احتیاطی تدابیر اختیار کریں بلکہ وہیں پر حکومت کی طرف سے مفت لگائی جائے والی کرونا ویکسین لازمی لگوائیں۔

زبیرصدیقی

مزید :

ملتان صفحہ آخر -