صحافیوں کا قتل، شام میں سب سے  زیادہ واقعات،میکسیکو کادوسرا نمبر

صحافیوں کا قتل، شام میں سب سے  زیادہ واقعات،میکسیکو کادوسرا نمبر

  

 کوٹ ادو(تحصیل رپورٹر)پاکستان سمیت دنیا بھر میں آزادی صحافت کے عالمی دن آج منایا جائے گا،اس دن کو منانے کا مقصد عالمی سطح پرصحافتی آزادی کی اہمیت کو اجاگر کرنے کے ساتھ ساتھ ایسے اقدامات کا حصول بھی(بقیہ نمبر18صفحہ6پر)

 ہے جس میں آزادی صحافت میں پیش آنے والی مشکلات اور رکاوٹوں کا سدباب بھی کیا جا سکے، اس دن کو منانے کا آغاز 1991 ء میں نیمبیا سے ہوا جبکہ اقوام متحدہ نے 3 مئی 1993 ء کو باقاعدہ طور پر آزادی صحافت کا عالمی دن منانے کااعلان کیا اس دن تمام دنیا کی صحافتی برادری اس بات کا تجدید عہد کرتی ہے کہ کسی بھی پرتشدد عناصر یا ریاستی دباؤ کے بغیر آزاد سچی اور ذمہ دارانہ اطلاعات عوام تک پہنچنے کیلئے لڑتے رہیں گے، اس دن تمام صحافی اپنے پیشہ وارانہ فرائض کو پوری ایمانداری اور حق گوئی و بے باکی کے ساتھ جاری رکھنے کا عزم دہراتے ہیں، صحافیوں کی عالمی تنظیم رپورٹرز ود آؤٹ بارڈرز کی رپورٹ کے مطابق گزشتہ برس صحافیوں کے قتل میں سب سے زیادہ متاثر شام رہا اسکے بعد میکسیکو پھر افغانستان اور عراق کا نمبر آتا ہے، دنیا بھر میں آزادی صحافت کیلئے صحافیوں کی قربانیاں لازوال ہیں، پاکستان کا جائزہ لیا جائے تو یہاں بھی صحافی ایک طویل عرصے سے اپنی آزادی کیلئے قربانیاں دے رہے ہیں، انکی قربانیوں کی ایک ناقابل فراموش تاریخ ہے، آمریت کے دور میں صحافیوں کو بے پناہ اذیت و تشدد کا نشانہ بنایا گیا‘ان پر کوڑے تک برسائے گئے‘ نام نہاد سول حکمرانوں کے دور میں اخبار اور چینلز کو مالی مشکلات سے دوچار کیا گیا‘ ان کے اشتہارات بند کر دئیے گئے اور انکی ادائیگیوں کو روک لیا گیا‘ ان میں تاخیری حربے استعمال کئے گئے

صحافیوں کاقتل

مزید :

ملتان صفحہ آخر -