ایس اوپیز نظر انداز، بازار، مارکیٹیں فل، خطرے کی نئی گھنٹی

ایس اوپیز نظر انداز، بازار، مارکیٹیں فل، خطرے کی نئی گھنٹی

  

 ملتان،عبدالحکیم، وہاڑی، رحیم یارخان، (سپیشل رپورٹر، بیورو رپورٹر، سٹی رپورٹر)ملتان میں دو روزہ لاک ڈاؤن کے بعد گزشتہ روز مارکیٹیں کھلتے ہی عوام کا ٹھاٹھیں مارتا سمندر بازاروں میں امڈ آیا ہر مارکیٹ میں خریدراوں کا رش،کورونا ایس او پیز نادارد ہوکر رہ گئے،شہر کے مختلف بازاروں میں رش کے باعث مختلف سڑکیں دن بھر ٹریفک سے جام رہیں۔پاکستان سروے کے مطابق ملتان میں کورونا ایس او پیز کے باعث گزشتہ دو روز لاک ڈاؤن کے باعث مارکیٹیں بند رہیں (بقیہ نمبر1صفحہ6پر)

 جبکہ گزشتہ روز لاک ڈاؤن کا سلسلہ ختم ہوتے ہی مارکیٹیں کھل گئی ہیں جس کے نتیجہ میں ملتان شہر کے اہم بازاروں حسین آگائی،چوک بازار،بوہڑ گیٹ،حرم گیٹ،النگ بازاروں،اکبر روڈ،ریلوے روڈ ابدالی روڈ سمیت سرکلر روڈ پر قائم بازاروں و مارکیٹوں میں خریداروں کا بے پناہ رش دیکھنے میں آیا۔واضع رہے کہ ماہ صیام کا آخری عشرہ قریب آتے ہی عید خریداری کیلئے شہریوں نے بازاروں کا رخ کرناشروع کردیاہے جبکہ عید سے پہلے لاک ڈاؤن کی پیشگوئی کے باعث شہری بروقت خریداری کرنا چاہتے ہیں جس کے باعث مارکیٹوں میں رش کی صورتحال پائی جاتی ہے اور کورونا ایس او پیز نادارد ہوکر رہ گئے ہیں۔اس ضمن میں گزشتہ روز مذکورہ رش کے باعث شہر کی اہم شاہراؤ ں پر ٹریفک جام رہی جس سے شہریوں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔عوامی حلقوں نے ضلعی و ٹریفک انتظامیہ سے مذکورہ صورتحال کا فوری نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے۔ضلع بھر میں کورونا ایس او پیز کی خلاف ورزی کرنے والوں کے خلاف انتظامیہ اور پولیس کی کاروائیاں جاری ہیں گزشتہ روز پولیس اور انتظامیہ نے کاروائی کرتے ہوئے  کورونا ڈیزیز  ایکٹ کے تحت مختلف تھانہ جات میں 131 مقدمات درج کئے گئے اس حوالہ سے ڈی پی او زاہد نواز مروت نے کہا کہ شہری حکومتی ہدایات کے مطابق شام 6بجے کاروباری مراکز بند کردیں ہر شہری پر ماسک پہننا لازمی ہے خلاف ورزی کرنے والوں کے خلاف کاروائی ہوگی شہری حکومتی ہدایات پر عمل کرکے ذمہ داری کا ثبوت دیں۔ این سی او سی کے جاری کردہ نوٹیفکیشن کے مطابق ملک بھر میں 8تا16مئی تک مکمل لاک ڈاؤن لاگو کیا گیا ہے جس میں صرف ویکسی نیشن سنٹرز،میڈیکل سٹور،بیکریز،پٹرول پمپس،گروسری سٹورز،سبزی،فروٹ اور گوشت شاپس کو کھلنے کی اجازت دی گئی ہے جبکہ ضروریات زندگی سے وابستہ انتہائی اہم کاروبار کریانہ سٹور،اور رسل ورسائل کے کاروبارآٹوز اورپنکچر شاپس کو بند رکھا گیا ہے جو کہ عوام ا لناس کے ساتھ سخت ناانصافی و زیادتی ہے،مرکزی انجمن تاجران عبدالحکیم کے صدر چودھری خالد حسین میؤاور جنرل سیکرٹری مدثرجمیل سلیمی نے کہا کہ اشیاء کریانہ کے بغیر زندگی کا گزار ناناممکن ہوگا جبکہ ہنگامی صورت حال یا بیماری کی حالت میں گھر سے باہر نکلنے کے دوران موٹرسائیکل،بائیسائیکل،گاڑی وغیرہ کے استعمال یا کسی ممکنہ خرابی پر عوام کو انتہائی مشکلات کا سامنا ہوگااس طرح عوام لناس کی تکالیف مزید بڑھ جائیں گی۔رہنماؤں نے مزید کہا کہ حکومت گزشتہ 2ایام جمعہ،ہفتہ کے لاک ڈاؤن کے دوران ہی دیکھ لے کہ بے شمار افراد کو انکے خراب موٹرسائیکلز و گاڑیوں کے ہمراہ سڑک کنارے خوار ہوتے ہوئے دیکھا گیا ہے اوربہت سارے ایسے کاروبار کے حامل افراد نے ایس او پیز کی خلاف ورزی کرتے ہوئے اپنے کاروبار جاری بھی رکھے ہیں جس کے سبب انتظامیہ اور قانون نافذکرنیوالے اداروں کو قانون کی پاسداری کروانے میں بہت مزاحمت کا سامنا کرنا پڑا ہے۔انہوں نے وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزداراور ڈپٹی کمشنر خانیوال آغا ظہیر عباس شیرزازی سے مطالبہ کیا کہ خدارا عوام کی مشکلات میں اضافہ نہ کریں اورمکمل لاک ڈاؤن کے دوران کریانہ سٹور،آٹوز اور پنکچر شاپس اور مکینکس کو بھی کاروبار کی اجازت دی جائے تاکہ عوام کو سہولیات کے ساتھ انتظامیہ کی مشکلات میں کمی واقع ہوسکے۔ 

رش

مزید :

ملتان صفحہ آخر -