مسلم لیگ ن اور پیپلزپارٹی سے کوئی رابطہ نہیں ہوا، میرے ساتھ میرے اپنے لوگ ہیں، جہانگیر ترین

مسلم لیگ ن اور پیپلزپارٹی سے کوئی رابطہ نہیں ہوا، میرے ساتھ میرے اپنے لوگ ...
مسلم لیگ ن اور پیپلزپارٹی سے کوئی رابطہ نہیں ہوا، میرے ساتھ میرے اپنے لوگ ہیں، جہانگیر ترین

  

لاہور ( ڈیلی پاکستان آن لائن) جہانگیر ترین نے احتساب عدالت لاہور کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ میرا کیس کریمنل نہیں ہے ، سب کو صاف معلوم ہے جو کیس ہو رہے ہیں ان کی بنیاد کچھ اور ہے ، مسلم لیگ ن اور پیپلزپارٹی سے کوئی رابطہ نہیں ہوا ، میرے ساتھ میرے اپنے لوگ ہیں ۔

جہانگیر ترین نے کہا کہ ایک سال سے تفتیش جاری ہے ، ہم تفتیش سے نہیں بھاگتے ،ایف آئی اے کا کیس میں کوئی کردار نہیں ، میں کبھی بھی اس تحقیقات کو نہیں مانتا ، امید ہے علی ظفر وزیر اعظم کو اچھی رپورٹ دیں گے ۔

انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم سے میرے دوستوں کی ملاقات ہوئی تھی ، ہم نے کبھی نہیں کہا کہ کیس ختم کر دیں ، میں شاہ محمود قریشی کے بیان پر کچھ نہیں کہنا چاہتا۔

اس سے پہلے کارپوریٹ فراڈ اور منی لانڈرنگ کیس میں لاہور کی بینکنگ کورٹ میں جہانگیر ترین اور علی ترین کی درخواست ضمانت پر سماعت ہوئی، جہانگیر ترین اور ان کے بیٹے علی ترین نے عدالت میں اپنی حاضری مکمل کروائی۔ 

 دوران سماعت جج نے ایف آئی پراسیکیوٹر سے پو چھا کہ جہانگیر ترین اور علی ترین کے کیس کا کیا بنا؟ ،جے آئی ٹی رپورٹ طلب کی گئی تھی کیا آپ لائے ہیں جس ایف آئی اے پراسیکیوٹر کا کہناتھا کہ کیس میں تمام ملزمان کے بیانات قلمبند کرنے اور بینکو ں کے ریکارڈ کےس ساتھ تفتیش کررہے ہیں اس لئے رپورٹ ابھی مکمل نہیں ہوسکی آئندہ سماعت پر پیش کرد ی جائے گی۔

عدالت نے آئندہ سماعت پر ایف آئی اے کے تفتیشی افسر سے کیس کا مکمل ریکارڈ طلب کرتے ہوئے جہانگیر ترین اور علی ترین کو 19مئی تک گرفتار کرنے سے روک دیا۔

مزید :

اہم خبریں -قومی -