پاکستان میں حکومت کی تبدیلی سے امریکہ مخالف جذبات کو تقویت ملی:عمران خان

پاکستان میں حکومت کی تبدیلی سے امریکہ مخالف جذبات کو تقویت ملی:عمران خان

  

        اسلام آباد(مانیٹرنگ، ڈیسک،نیوز ایجنسیاں) چیئرمین تحریک انصاف عمران خان نے جوبائیڈن انتظامیہ سے پاکستان میں حکومت کی تبدیلی پر وضاحت مانگ لی اور کہا ہے کہ کیا امریکہ کے اس اقدام سے پاکستان میں امریکہ مخالف جذبات کو تقویت نہیں ملی؟سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر اپنی ٹویٹ میں چیئرمین تحریک انصاف عمران خان نے جوبائیڈن انتظامیہ کو مخاطب کرتے ہوئے سوال کیا کہ 22 کروڑ آبادی کے حامل ملک کے منتخب وزیراعظم کو ہٹا کر کٹھ پتلی وزیراعظم کو لایا گیا، کیا امریکہ کے اس اقدام سے پاکستان میں امریکا مخالف جذبات کو تقویت نہیں ملی؟عمران خان نے کہا کہ امریکا پاکستان میں فرمانبردار اور کٹھ پتلی وزیراعظم کا خواہاں تھا اور پاکستان کے یورپین وار میں غیر جانب دارانہ کردار سے خائف تھا، سازش کے تحت کرپٹ ترین آدمی کو وزیراعظم بنایا گیا ہے، انہیں اس لیے لایا گیا کہ یہ پاکستان کے مفادات کے خلاف امریکا کی باتیں مانیں گے، امریکا کی جنگ میں شرکت کرکے ہم نے اپنے لوگوں کو شہید کرایا، امریکی جنگ لڑ کر پاکستان کو کیا فائدہ ہوا؟عمران خان نے کہا کہ ہم نے سب کو آگاہ کیا کہ پاکستان میں ہماری حکومت بیرونی سازش کے تحت ہٹائی گئی، مراسلہ قوم کے سامنے رکھا، صدر، چیف جسٹس سب کو مراسلہ بھیجا اور بتایا کہ پاکستان کی حکومت کے خلاف سازش کی گئی، موجودہ وزیراعظم نے کہا مراسلہ جھوٹا ہے، آج سب مان رہے ہیں، امریکا میں پاکستانی سفیر کے پیغام کے بعد چیف جسٹس کا یہ فرض ہے کہ وہ کمیشن بنائیں۔چیئرمین پی ٹی آئی کا کہنا تھا کہ ہم چاہتے ہیں کہ مراسلے پر کمیشن بنایا جائے اور اس کی کھلی سماعت ہو، تحقیقات ہوں گی تو پتا چلے گا کس کس نے ملک کے ساتھ غداری کی، انہوں نے ہم پر کیسز بنائے اصل میں ان پر غداری کے کیسز چلنے چاہئیں، دریں اثنا  حلیم عادل شیخ نے  گزشتہ روز عمران خان سے ملاقات کی امپورٹڈ حکومت کے خلاف حقیقی آزادی مارچ کے حوالے سے گفتگوسندھ کی مجموعی سیاسی صورتحال پر بھی تبادلہ خیال۔حلیم عادل شیخ نے چئیرمین پی ٹی آئی عمران خان کو سندھ کی صورتحال سے آگاہ کیا۔چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان کا سندھ میں پیپلزپارٹی کی ناقص حکمرانی پر تشویش کا اظہارمیری خواہش ہے مارچ میں سندھ کے عوام کی شرکت زیادہ ہو، چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان کی حلیم عادل شیخ سے گفتگوسندھ میں امپورٹڈ حکومت کے خلاف زیادہ نفرت پائی جاتی ہے۔مجھے اندازہ ہے سندھ کی عوام اپنی حقیقی آزادی کے لیے بھرپور باہر نکلے گی عمران خان نے کہا ہے کہ  ملک کو حقیقی آزادی و خودمختاری دلانے تک چین سے نہیں بیٹھیں گے، رواں ماہ کے آخر میں اسلام آباد کی جانب غلامی نامنظور مارچ کا فیصلہ کیا ہے۔  تفصیلات کے مطابق  سابق وزیر اعظم عمران خان نے قوم کو ماہِ صیام کی تکمیل اور عیدِ سعید مبارک دی۔ انہوں نے اپنے پیغام میں کہا ہے کہ اللہ کی نعمتوں میں سے فکر و عمل کی آزادی سب سے بڑی نعمت ہے۔آزادی کی قدر ان کو ہوتا ہے جنہیں غلامی جیسی ذلت کا سامنا رہتا ہے۔ ان  کا کہنا ہے کہ 1947 میں رمضان کی27ویں شب غلامی کی زنجیروں جکڑی قوم کو آزادی ملی۔ سامراج آزادی کے بعد بھی ہم پر بالواسطہ غلامی کے سائے کیے رکھنے پر بضد رہا۔۔غلامی کا طوق گلے میں ڈال کر عروج و ترقی کی راہ پر کبھی گامزن نہیں ہوسکتے۔ ان کا کہنا ہے کہ پاکستان کا وقار اس مطلق آزادی و خودمختاری ہی سے وابستہ ہے۔ملک کو حقیقی آزادی و خودمختاری دلانے تک چین سے نہیں بیٹھیں گے۔چیئرمین پاکستان تحریک انصاف کے چیئر مین عمران خان نے کہا ہے کہ کارکن آزاد قوم کے ایک فرد کے طور پر تاریخی جدوجہد میں شریک ہونے کیلئے خود کو عملی طور پر تیار کریں،:وقت آن پہنچا ہے آپ آگے بڑھیں اور مملکت خداداد کی حقیقی آزادی و خودمختاری کی تحریک میں ہمارے دست و بازو بنیں!۔تحریک انصاف کے کارکنوں کے نام لکے گئے خط میں تحریک انصاف کے چیئر مین نے کہاکہ سب سے پہلے میں آپ کو ماہِ صیام کی تکمیل اور عیدِسعید کی مبارکباد پیش کرتا ہوں اور دعا گو ہوں کہ رب العزت آپ کے قیام و صیام کو شرفِ قبولیت عطا فرمائیں اور حصولِ تقویٰ کیلئے آپ کی محنت بار آور ثابت ہو!۔انہوں نے کہاکہ ربِّ کائنات کی پیدا کردہ نعمتوں میں سے فکر و عمل کی آزادی سب سے بڑی نعمت ہے اور اس کی حقیقی قدر و منزلت کا صحیح ادراک ان اقوام کو ہوتا ہے جنہیں غلامی جیسی ذلت کا سامنا رہتا ہے،یہی وہ چبھن تھی جس کے باعث برّصغیر کے مسلمانوں نے قائداعظم علیہ الرحمتہ کی قیادت میں اس عظیم جدوجہد کا فیصلہ کیا جسے میں اور آپ ”تحریکِ پاکستان“کے نام سے جانتے ہیں۔ 

عمران خان

مزید :

صفحہ اول -