پرائیویٹ حج سکیم کے پیکیجز 10لاکھ روپے سے 25لاکھ تک ہونگے: سرکاری پیکیج 10لاکھ سے  بھی بڑھنے کا امکان 

پرائیویٹ حج سکیم کے پیکیجز 10لاکھ روپے سے 25لاکھ تک ہونگے: سرکاری پیکیج 10لاکھ ...

  

لاہور(میاں اشفاق انجم) حج 2022ء صرف سرکاری سکیم کا حج پیکیج 9لاکھ سے زائد کا بنانا گورنمنٹ کی مجبوری نہیں نیا پرائیویٹ حج سکیم کا اکانومی حج پیکیج کم از کم 10لاکھ تھری سٹار،12لاکھ 4سٹار مکتب Bکیٹگری کے ساتھ 14لاکھ اور فائیو سٹار ہوٹل کے ساتھ اے کیٹگری مکتب بغیر ٹکٹ کے 16سے 25لاکھ تک رکھنا مجبوری بن گیا ہے وزارت مذہبی امور کے سالہا سال سے حج کروانیوالے ذمہ داران بھی سعودی تعلیمات کے منتظر ہیں 7سے 10لاکھ کے درمیان پیکیج دینے کا وعدہ کیا ہے 8لاکھ کی تجویز قابل عمل نہیں آ سکی ہے اب ساڑھے 8لاکھ کی تجویز سامنے آئی ہے ڈی جی حج ابھی تک مکتب اور عمارتوں کی حتمی قیمت بتا نہیں رہے جس کی وجہ سے سرکاری حج پیکیج مزید مہنگا ہونے کا امکان ہے۔2019ء کے مقابلے میں کم از کم 2گنا ہو جائے گا اس سال سعودی گورنمنٹ نے مونسلٹی ٹیکس 5فیصد،VAT ٹیکس 15فیصد لازمی کر دیا ہے 2019ء میں ائر لائنز حج کرایہ ایک لاکھ 25ہزار تک وصول کرتی رہیں ہیں اب 40روزہ حاجیوں کیلئے ایک ہزار ڈالر یعنی ایک لاکھ 86ہزار کرایہ دیا ہے شارٹ حج کیلئے ڈھائی لاکھ کرایہ کم از کم رکھا گیا ہے۔ منی عرفات کی 1650 ریال وصول کی جانیوالی رقم اس سال 52سو ریال کر دی گئی ہے مکتب A گریڈ کی فیس جو 4ہزار ریال تھی اس سال 92سو ریال کی تجویز سامنے آئی ہے 2019ء میں ریال 38کا تھا اب 52روپے کا ہو گیا ہے سرکار اپنی جگہ پریشان ہے اور پرائیویٹ حج آرگنائزر جو سالہا سال سے حج کرا رہے ہیں وہ سر پکڑ ے بیٹھے ہیں عوام کی مہنگائی نے جان نکال رکھی ہے بتایا گیا ہے وزارت مذہبی امور نے حج 2022ء کے لئے اپنا کوٹہ کم اور پرائیویٹ سکیم کا کوٹہ خوشی سے نہیں بڑھایا بلکہ عزت بچانے کیلئے ناقابل عمل حج آپریشن کے اخراجات کو سامنے رکھتے ہوئے انتہائی قدم اٹھایا ہے اس سال 60فیصد پرائیویٹ اور 40فیصد سرکاری حاجی جائیں گے دلچسپ عمل یہ ہے وزارت پالیسی کا اعلان کرنے کے باوجود ابھی تک پالیسی کو حتمی شکل نہیں دے سکی ہے نظریں سعودی عرب کی طرف ہیں پاکستان کا کل کوٹہ 81132ہے۔

کرایہ

مزید :

صفحہ آخر -