سپین کا انٹر نیٹ قانون ،میڈیا خوش،گوگل شدید پریشان

سپین کا انٹر نیٹ قانون ،میڈیا خوش،گوگل شدید پریشان
سپین کا انٹر نیٹ قانون ،میڈیا خوش،گوگل شدید پریشان

  

میڈرڈ(نیوزڈیسک)سپین کی حکومت نے ایک ایسا قانون منظور کیا ہے جس کے باعث میڈیا کمپنیوں کو یہ آزادی ہوگی کہ اگر سرچ انجن گوگل ان کی کوئی تحریر اپنے نیوز پیجز پر لگائے تو وہ گوگل پر مقدمہ کر سکیں گی جبکہ گوگل نے اس اقدام کی سختی سے مخالفت کی ہے۔

ہسپانوی حکومت کا کہنا ہے کہ اس طرح کی قانون سازی سے میڈیا کمپنیوں کے جملہ حقوق محفوظ رہیں گے اور اگر کوئی ان کی تحریر استعمال کرنا چاہے گا تو اس مقصد کے لئے اسے میڈیا کمپنیوں کو ادائیگی کرنی ہوگی۔ تاہم فیس بک اور ٹوئیٹر کو اس قانون سے استثنیٰ حاصل ہو گا۔ اسی لئے سپین میں اس قانون کو ’گوگل لاء‘ کہا جارہا ہے۔

دوسری جانب امریکی کمپنی گوگل نے اس قانون پر سخت نا پسندیدگی کا اظہار کیا ہے۔ کمپنی کی جانب سے جاری کئے گئے بیان میں کہا گیا ہے کہ گوگل نیوز کے پیجز کی بدولت ٹریفک ان پیجز پر جاتی ہے جہاں سے یہ خبریں لی جاتی ہیں۔ قبل ازیں گوگل نے ہسپانوی حکومت کو دھمکی بھی لگا ئی تھی کہ اگر ایسا قانون منظور کیا گیا تو وہ سپین میں اپنا نیوز پیج بند کردیں گے لیکن ہسپانوی حکومت نے اس بات پر کان نہ دھرا اور پارلیمنٹ سے قانون منظور کروالیا۔

مزید :

بین الاقوامی -