پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں تاریخی کمی

پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں تاریخی کمی
پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں تاریخی کمی

  

دنیا بھر میں پٹرولیم مصنوعات کے نرخوں میں اتار چڑھاﺅ کا براہ راست اثر اشیائے خورونوش وضروریہ، ٹرانسپورٹ کرایوں ،صنعتی و زرعی پیداواری لاگت، غرضیکہ زندگی کے ہر شعبے پر پڑتا ہے، یوں عام شہری براہ راست اور بالواسطہ اس اتار چڑھاﺅ کی زد میں آتے ہیں۔ پاکستان میں بھی پٹرولیم مصنوعات کے نرخ عالمی منڈی کو پیش نظر رکھ کر مقرر کئے جاتے ہیں۔ دیگر ممالک کی طرح پاکستان میں بھی شہری روز بروز بڑھتی ہوئی مہنگائی کے ہاتھوں پریشان ہیںاور پٹرولیم مصنوعات میں کمی کی امید میں رہتے ہیں۔ گزشتہ دنوں عالمی منڈی میں پٹرولیم مصنوعات کے نرخ کم ہونے پر حکومت پاکستان نے بھی پٹرول،ڈیزل اور مٹی کے تیل کی قیمتوں میں یکمشت بالترتیب 9روپے 43پیسے،6روپے 18پیسے اور 8روپے16پیسے فی لیٹر کی تاریخی کمی کر کے ایک شاندار مثال قائم کی ہے کیونکہ ماضی میں کبھی بھی پٹرولیم مصنوعات کے نرخو ںمیں بیک وقت اتنی کمی کبھی نہیں کی گئی۔ اگرچہ پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں زیادہ کمی کی توقع کی جا رہی تھی تاہم قومی معیشت کو پچھلے کئی ماہ سے جس سیاسی بحران کا سامنارہا ہے اس کے تناظر میں حکومت کے لئے اس سے زائد کمی ممکن نہ تھی۔ وزیر اعظم نے پٹرولیم مصنوعات کی نرخوں میں کمی کا اعلان خود کیا اور صوبائی حکومتوں کو ہدایت کی کہ اس کا براہ راست فائدہ فوری طور پر عوام تک پہنچایا جائے، کیونکہ دیکھنے میں آیا ہے کہ ہمارے ہاں حکومتی یا کسی بھی سطح پر کی جانے والے بہتری کا فائدہ عوام تک مشکل سے ہی پہنچتا ہے، تاہم امید واثق ہے کہ اس حکومتی اقدام سے تمام درآمدی اشیاءاور ملک میں اشیائے صرف کے نرخوں میں کمی کا عمومی رجحان سامنے آئے گا۔ خاص طور پر پٹرولیم کی قیمتوں میں کمی کے بعد پبلک ٹرانسپورٹ کے کرایوں میں کمی کی اشد ضرورت محسوس کی جا رہی ہے۔ گڈز ٹرانسپورٹرز کی طرف سے کرایوں میں 5فیصد کمی کے اعلان سے اشیائے صرف کی نقل و حمل کے اخراجات کم ہوں گے جس کا فائدہ چیزوں کی قیمتوں میں کمی کی صورت میں عوام تک پہنچے گا۔ حکومت کے اس فیصلے کی جتنی بھی تعریف کی جائے کم ہے کیونکہ اس سے عوام کوبے حد ریلیف ملنے کی توقع ہے۔

وزیر اعظم پاکستان محمد نواز شریف کے احکامات کی روشنی میں وفاقی حکومت کے اس اقدام کے فوراً بعد وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف کی ہدایت پر صوبائی وزرائ‘ چیف سیکرٹری اور آئی جی سمیت اعلیٰ حکام کا اجلاس منعقد ہوا جس میں پٹرولیم مصنوعات میں کمی کے بعد کی صورت حال کا بغور جائزہ لیا گیا اور اس امر کو یقینی بنانے کے لئے کہ تیل کی قیمتوں میں کمی کے اثرات عام آدمی تک پہنچیں، ضروری ہدایات جاری کی گئیں۔ بالخصوص پٹرول پمپوں پر وافر مقدار میں تیل کی فراہمی کو یقینی بنانے کے لئے چیف سیکرٹری پنجاب نے سیکرٹری لیبر اور آئی جی پنجاب کو اس ضمن میں اقدامات کرنے کے لئے کہا اور پٹرول کی مصنوعی قلت پیدا کرنے کی کوشش کرنے والے کے خلاف موقع پر فوری کارروائی عمل میں لانے کی ہدایت کی۔ وزیراعلیٰ پنجاب کی ہدایت پر صوبہ بھر میں صورت حال پر کڑی نگاہ رکھنے اور متعلقہ حکام کو رپورٹ پیش کرنے کے لئے بھی احکامات جاری کئے گئے ہیں۔

اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ پٹرولیم مصنوعات کی نئی قیمتوں کے مطابق اشیائے خوردونوش، کرایہ جات اور دیگر چیزوں کے نرخوں میں بھی اسی شرح سے کمی کو یقینی بنایا جائے گا۔ صوبائی وزراءنے کہا کہ وزیراعظم کی طرف سے پٹرول کی قیمتوں میں کمی کا فیصلہ خوش آئند ہے، جس کے مثبت ا ثرات سامنے آئیں گے۔ انہوں نے کہا کہ ماضی کی روایات کے برعکس موجودہ حکومت نے عوامی فلاح و بہبود کو سامنے رکھتے ہوئے پٹرولیم کی مصنوعات کی قیمتوں میں خاطرخواہ کمی کی ہے جو ایک ریکارڈ ہے۔ صوبائی وزراءنے کہا کہ وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف حکومتی مشینری کی طرف سے اس اہم اقدام سے زیادہ سے زیادہ عوامی مفاد کا حصول چاہتے ہیں اور اس ضمن میں رکاوٹ ڈالنے والوں کے خلاف سخت کارروائی ہونی چاہیے۔ اجلاس میں چیف سیکرٹری پنجاب نے متعلقہ سیکرٹری صاحبان اور آئی جی پنجاب کو صوبے بھر میں ضروری اقدامات کو یقینی بنانے کی ہدایت کی۔اجلاس میں وزیرخوراک خواجہ بلال یٰسین، وزیرزراعت ڈاکٹر فرخ جاوید، نویداکرم چیمہ، سیکرٹری لیبر اور آئی جی پنجاب سمیت اعلیٰ حکام نے شرکت کی۔

وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف نے وزیر اعظم محمد نواز شریف کی قیادت میں مسلم لیگ (ن) کی وفاقی حکومت کی جانب سے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں کمی کو خوش آئند اور عوام دوست اقدام قرار دیتے ہوئے صوبائی انتظامیہ کو اس کمی کافائدہ براہ راست صوبے کے عوام کو فی الفور منتقل کرنے کے حوالے سے ہدایات جاری کردی ہیں۔ وزیر اعلیٰ محمد شہباز شریف نے صوبائی انتظامیہ ،متعلقہ محکموں اور اداروں کو ہدایات جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ عوام کو پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں کمی کافائدہ ہر صورت میں پہنچنا چاہئے۔ پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں کمی کے تناسب سے ہی عام آدمی کو ریلیف کی فراہمی نہ صرف یقینی بنائی جائے بلکہ یہ نظر بھی آنی چاہئے۔ و زیر اعلیٰ نے صوبائی انتظامیہ ،متعلقہ محکموں اور اداروں کو ہدایت کی کہ پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں کمی کے بعد صوبے کے عوام کو حقیقی معنوں میں فی الفورریلیف فراہم کرنے کے لئے جامع ایکشن پلان تیارکرکے اس پر فوری عملدرآمد یقینی بنایا جائے۔ انہوں نے کہا کہ اشیائے ضرورےہ، سبزیوںاورپھلوں کی قیمتوں میں کمی کے حوالے سے فی الفور اقدامات اٹھائے جائیں اورٹرانسپورٹ کے کرایو ں میں فوری کمی کے لئے بھی جامع لائحہ عمل مرتب کرکے عمل درآمد یقینی بنایا جائے۔ متعلقہ ادارے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں کمی کے فوائد عام آدمی تک پہنچانے کے لئے متحرک وفعال کردار ادا کریں اوراس عوام دوست اقدام کے ثمرات براہ راست عام آدمی تک پہنچنے چاہئیںاورعوام کو ریلیف فراہم کرنے کے لئے کوئی کسر اٹھا نہ رکھی جائے۔

وزیراعلیٰ نے انسپکٹر جنرل پولیس اور سیکرٹری لیبر کو ہدایت کی کہ پٹرول پمپوں پر پٹرولیم مصنوعات کی دستیابی ہر صورت یقینی بنائی جائے، خصوصی ٹیمیں تشکیل دی جائیں اور مقررہ نرخوں سے زائد پر فروخت کے ذمہ دار پٹرول پمپ مالکان کے خلاف بلاامتیاز کارروائی کی جائے۔انہوں نے کہا کہ کسی بھی پٹرول پمپ پر پٹرولیم مصنوعات کی عدم دستیابی کی شکایت نہیں آنی چاہئے۔ اس ضمن میں صورت حال پر نظر رکھی جائے او رروزانہ کی بنیاد پر رپورٹ پیش کی جائے۔ وزیر اعلیٰ محمد شہباز شریف نے کہا کہ وزیراعظم محمد نوازشریف کی حکومت کو ےہ کریڈ ٹ جاتا ہے کہ تاریخ میں پہلی بار پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں نمایاںکمی کی گئی ہے اور بلاشبہ وفاقی حکومت کا پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں ریکارڈ کمی کا فیصلہ لائق تحسین اور حکومت کی عوام دوستی کا ثبوت ہے۔ پٹر ولیم مصنوعات کی قیمتوں میں کمی کے تاریخی اقدام سے براہ راست ملک کے عام آدمی کو فائدہ پہنچے گا۔ انشااللہ مسلم لیگ( ن) کی حکومت عوام کو مزیدریلیف فراہم کرنے کے لئے مستقبل میں بھی اےسے اقدامات کرتی رہے گی۔

حکومت نے تو پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں تاریخی کمی کر کے عوام کو ریلیف دینے کے لئے اپنی ذمہ داری بطریق احسن پوری کی دی ہے۔ اب یہ تاجر برادری، صنعت کاروں ، کاروباری حضرات اور اشیاءکی قیمتوں اور عوامی خدمات سے منسلک ہر شخص کی اخلاقی اور قومی ذمہ داری بنتی ہے کہ وہ اشیائے خورونوش ،ضروریہ اور ٹرانسپورٹ کرایوں میں کمی کر کے اپنا قومی فریضہ سر انجام دیں اور لوگوں کو مہنگائی سے نجات دلانے میں حکومت کی کاوشوں کا بھر پور ساتھ دیں۔ ترقی پذیر ممالک کے لئے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں استحکام نہایت اہمیت کا حامل ہوتا ہے۔ اب یہ صوبائی حکومتوں کی ذمہ داری ہے کہ وہ پٹرولیم قیمتوں میں کمی کا فائدہ عوام تک پہچانے کے لئے فوری اقدامات کریں۔ پنجاب میں گڈزٹرانسپورٹ کے کرایوں میں 8فیصد جبکہ لاہور انٹر سٹی کے کرایوں میں بھی 5فیصد کمی کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ گزشتہ دس برسوں میں یکمشت پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں ایسی تاریخی کمی پہلی بار دیکھی گئی ہے۔ ماہرین معیشت کا اندازہ ہے کہ قیمتوں میں کمی کے اس تناسب سے مہنگائی میں 5سے8فیصد کمی ہونی چاہیے نیز یہ کہ بجلی ،ٹرانسپورٹ کرایوں ،صنعتی و زرعی پیداواری لاگت میں بھی خاطر خواہ کمی سامنے آنی چاہیے۔

مزید :

کالم -