سانحہ واہگہ ،کویت سے ہنی مون منانے آنےوالا جوڑا بھی دہشت گردی کا شکار ہوگیا

سانحہ واہگہ ،کویت سے ہنی مون منانے آنےوالا جوڑا بھی دہشت گردی کا شکار ہوگیا
سانحہ واہگہ ،کویت سے ہنی مون منانے آنےوالا جوڑا بھی دہشت گردی کا شکار ہوگیا

  

لاہور (ویب ڈیسک) واہگہ بارڈ پر خود کش دھماکے میں ایک نوبیاہتا جوڑا بھی جاں بحق ہوگیا، نوبیاہتا جوڑا الیاس اور اس کی بیوی ارم بیرون ملک سے لاہور ہنی مون کیلئے آیا تھا۔اخباری رپورٹ کے مطابق الیاس دس سال سے کویت میں مقیم تھا اور لیدر کا کام کرتا تھا ۔اسکی بچپن سے ہی اپنی خالہ کی بیٹی ارم سے شادی کی بات چیت طے ہوچکی تھی جو ایک ملٹی نیشنل کمپنی میں منیجر تھی ۔پندرہ اکتوبر کی رات الیاس اور ارم کی کویت میں ایک ہوٹل میں شادی ہوئی جسکے بعد نیا نویلا جوڑا ہنی مون منانے کیلئے لاہور پہنچ گئے، لاہور میں الیاس نے اپنے ایک قریبی دورست جمیل کے گھر پر قیام کیا۔ گزشتہ صبح دونوں میاں بیوی نے ناشتہ کیا جس کے بعد الیاس نے اپنے د وست جمیل کو واہگہ بارڈر کی تقریب میں ساتھ جانے کیلئے کہا لیکن جمیل کسی ضروری کام کے سلسلہ میں واہگہ بارڈر نہ جاسکا جس کے بعد دونوں میاں بیوی دوست کی گاڑی لے کر واہگہ بارڈر چلے گئے ۔واقعے کی اطلاع ملنے پر الیاس کا دوست جمیل اپنی فیملی کے ہمراہ دھاڑیں مارتا ہوا ہسپتال پہنچ گیا جہاں جمیل صدمے سے نیم بیہوش ہوگیا ، بعد ازاں جمیل کی بیوی نے ارم کے عزیز و اقارب کو اطلاع دی۔ دولہا الیاس کے عزیز و اقارب جو راولپنڈی خیابان سرسید سیکٹر تھری میں رہائش پذیر ہیں،کو جب ان دونوں کے موت کی اطلاع ملی تو کہرام مچ گیا اور دونوں کے عزیز و اقارب دونوں کی لاشیں تلاش کرنے کیلئے ہسپتالوں میں پھرتے رہے۔

مزید :

لاہور -