وزیرتعلیم کا تعمیر سکول پروگرام میں سست روی پر برہمی کا اظہار

وزیرتعلیم کا تعمیر سکول پروگرام میں سست روی پر برہمی کا اظہار

پشاور( پاکستان نیوز)خیبر پختونخوا کے وزیر تعلیم محمد عاطف خان نے تعمیر سکول پروگرام میں سست روی پر سخت برہمی کا اظہار کرتے ہوئے متعلقہ حکام کو ایک ہفتے کے اندر اندر مذکورہ پروگرام پر عمل درآمد یقینی بنانے اور اس سلسلے میں اگلے ہفتے پراگرس رپورٹ پیش کرنے کی ہدایت کی ہے۔انہوں نے خبردار کیا کہ پروگرام میں مزید تاخیر کسی صورت برداشت نہیں کی جائیگی اور تاخیر کا سبب بننے والوں کے خلاف سخت کاروائی ہوگی۔یہ ہدایات انہوں نے پیر کے دن پشاور میں تعمیر سکول پروگرام کے جائزہ اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے دیں۔اجلاس میں دوسروں کے علاوہ سیکرٹری تعلیم علی رضا بھٹہ،ایڈیشنل سیکرٹری قیصر عالم اور دیگر متعلقہ حکام نے بھی شرکت کی۔تعمیر سکول پروگرام کے تحت سرکاری سکولوں میں پینے کا پانی ،اضافی کمروں ،چاردیواری اور ٹائلٹس کی تعمیر ، فرنیچر کی فراہمی اور کمپیوٹر لیب کا قیام جیسی بنیادی سہولیات فراہم کرنے کا منصوبہ ہے اور اس مقصد کیلئے سکولوں کاانتخاب بھی کر دیا گیا ہے۔وزیر تعلیم نے کہا کہ خیبر پختونخوا ملک کا واحد صوبہ جس میں حکومت اپنے بجٹ کا 27.4فیصد تعلیم پر خرچ کررہی ہے جبکہ دوسروں صوبوں میں خیبر پختونخوا کے مقابلے میں یہ شرح کہیں کم ہے۔انہوں نے کہا کہ عمران خان کے وژن کے مطابق صوبے کے ہر بچے کے ہاتھ میں قلم دینا ہے اور اس وقت تک چین سے نہیں بیٹھیں گے جب تک یہ مشن پایہ تکمیل تک نہیں پہنچا پاتے۔محمد عاطف خان نے کہا کہ تبدیلی کے نعرے کو عملی جامہ پہنانا ہے اور تبدیلی کے اس سفر کو تیز تر کرنا ہے ۔انہوں نے کہا کہ اب عملی کام کرنے کا وقت ہے صرف باتوں سے کام نہیں چلے گا لہذا تمام سرکاری ادارے اورحکام تبدیلی کے اس سفر میں ہمنوا بن کر پاکستان تحریک انصاف کے مشن کو آگے بڑھائیں تاکہ مفلوک الحال عوام کی حالت سدھرے۔وزیر موصوف نے کہا کہ سرکاری پیسہ عوام کا ہے اور سب سے پہلے پیسہ لوگوں پر ہی خرچ کرنا ہے۔انہوں نے کہا جو قومیں اپنے بچوں کی تعلیم پر پیسہ خرچ کرتی ہیں دنیا کی کو ئی طاقت انہیں مٹا نہیں سکتی اس لئے سب سے پہلے بچوں کی تعلیم پر پیسہ خرچ کرنا حکومت خیبر پختونخوا اپنا فرض اولین سمجھتی ہے اور صوبائی حکومت کی ٹیم یہ فرض بطریق احسن اداکرنے میں کوئی کسر نہیں چھوڑے گی۔

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...