ریگولیٹری ڈیوٹی پر تاجر برادری کے تحفظات دور کرینگے ، ہارون اختر

ریگولیٹری ڈیوٹی پر تاجر برادری کے تحفظات دور کرینگے ، ہارون اختر

اسلام آباد (آن لائن) وزیر اعظم کے خصوصی معاون برائے ریونیو ہارون اختر نے کہا کہ تاجر برادری معیشت کی ترقی میں اہم کردار ادا کر رہی ہے اور وہ ان کے ٹیکس سے متعلقہ مسائل کو حل کرانے کی کوشش کریں گے۔ حکومت ریگولیٹری ڈیوٹی کے بارے میں تاجر برادری کے تحفظات پرغور کرے گی۔ ا ان خیالات کا اظہار انہوں نے اسلام آباد چیمبرکے ایک وفد سے بات چیت کرتے ہوئے کیا جس نے چیمبر کے صدر شیخ عامر وحید کی قیادت میں ان سے ملاقات کی۔ وفد میں چیمبر کے سینئر نائب صدر محمد نوید، نائب صدر نثار احمد مرزا، خالد جاوید، طارق صادق، میاں اکرم فرید، زبیر احمد ملک، میاں شوکت مسعود، چوہدری وحید الدین، ظفر بختاوری، خالد اقبال ملک، مزمل صابری، محمد اعجاز عباسی اور ناصر قریشی شامل تھے۔ ہارون اخترنے کہا کہ چیمبر تاجر برادری کے اہم مسائل تحریری طور پر بھیجے اور اس بات کی یقین دہانی کرائی کہ وہ ان کو حل کرانے کی کوشش کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ تمام چیمبرز آف کامرس اور ایسوسی ایشنزمتحد ہو کر اپنے مسائل کیلئے آواز اٹھائیں جس سے مثبت نتائج پیدا ہوں گے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت سرمایہ کاری اور کاروبار کیلئے مزید سازگار ماحول پیدا کرنے کیلئے اقدامات کر رہی ہے تاکہ نجی شعبہ معیشت کی ترقی میں مزید فعال کردار ادا کر سکے۔ ہارون اختر نے کہا کہ ایف بی آر کی اہم ذمہ داری ملک کیلئے ٹیکس اکھٹا کرنا ہے اور انہوں نے محکمے کو ہدایت دی ہوئی ہے کہ ٹیکس دہندگان میں خوف وہراس پھیلانے والے اقدامات سے گریز کیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ اگر محکمہ کسی ٹیکس دہندہ کے خلاف بلاجواز کوئی جبری کارروائی کرے تو وہ ان کے نوٹس میں لائیں تا کہ ایسے اقدامات کو روکا جا سکے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت ٹیکس دہندگان کو آڈٹ کیلئے منتخب کرنے کے طریقہ کار کو مزید آسان بنانے کی کوشش کرے گی تا کہ ان کے مسائل کم ہوں۔ انہوں نے کہا کہ کمپیوٹر کے پرزہ جات اور لوازمات پر عائد جی ایس ٹی پر بھی نظرثانی کرنے پر غور کیا جائے گا۔ اسلام آباد چیمبر کے صدر شیخ عامر وحید نے کہا کہ تاجر برادری ٹیکس ادائیگی کی ذمہ داری سے بخوبی آگاہ ہے اور ایف بی آر اگر دوستانہ روش اپنائے تو ٹیکس ریونیو کو زیادہ سہولت سے بہتر کیا جا سکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ٹیکس دہندگان کو ہر سال آڈٹ کیلئے سلیکٹ کرنے سے ان کیلئے مسائل پیدا ہو رہے ہیں۔

لہذا انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ جب ایک ٹیکس دہندہ کا آڈٹ ہو جائے تو اس کو آئندہ آڈٹ کیلئے کم از کم پانچ سال کی چھوٹ دی جائے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت نے کئی ایسی درآمداتی چیزوں پر ریگولیٹری ڈیوٹی بڑھا دی ہے جو صنعتی پیداوار میں خام مال کے طور پر استعمال ہوتی ہیں لہذا انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ حکومت مقامی صنعت کو نقصان سے بچانے کیلئے صنعتی پیداوار میں استعمال ہونے والی درآمداتی چیزوں پر ریگولیٹری ڈیوٹی کم کرے۔ اسلام آباد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے سینئر نائب صدر محمد نوید اور نائب صدر نثار مرزا نے کہا کہ حکومت نے کمپیوٹر اور لیپ ٹاپ پر عائد جی ایس ٹی ختم کر کے ایک اچھا فیصلہ کیا لیکن ان کے پرزہ جات اور لوازمات پر اب بھی جی ایس ٹی عائد ہے جو اس صنعت کی ترقی کی راہ میں ایک اہم رکاوٹ ہے لہذا انہوں نے مطالبہ کیا کہ حکومت کمپیوٹرز کے پرزہ جات پر جی ایس ٹی ختم کرے تا کہ یہ صنعت صلاحیت کے مطابق ترقی کر کے معیشت کو مستحکم کرنے میں فعال کردار ادا کر سکے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت فارماسوٹیکل انڈسٹری کے بھی اہم مسائل جلد حل کرنے کی کوشش کرے تاکہ یہ صنعت بہتر ترقی کر سکے۔ ۔#/s#

مزید : کامرس