سکیورٹیز اینڈ ایکسچینج کمیشن کی حسین اور حسن نواز کی کمپنیوں کے حصص منجمد کرنے کی تیاریاں

سکیورٹیز اینڈ ایکسچینج کمیشن کی حسین اور حسن نواز کی کمپنیوں کے حصص منجمد ...

اسلام آباد(آن لائن)احتساب عدالت کے فیصلے کے بعد سکیورٹیز اینڈ ایکسچینج کمیشن آف پاکستان(ایس ای سی پی)نے سابق وزیراعظم نواز شریف کے صاحبزادوں حسین اور حسن نواز کی کمپنیوں کے حصص منجمد کرنے کی تیاری کرلی، دونوں بھائیوں کی ملکیت میں موجود 10 کمپنیوں کی فہرست بھی مرتب ہو گئی ۔ سکیورٹیز اینڈ ایکسچینج کمیشن کے ذرائع کے مطابق حسین نواز 10کمپنیوں کے شیئر ہولڈرز ہیں جن میں محمد بخش ٹیکسٹائل ملز لمیٹڈ، اتفاق برادرز(پرائیویٹ)لمیٹڈ، برادرز سٹیل ملز لمیٹڈ، حدیبیہ پیپرز ملز، حدیبیہ انجینئرنگ لمیٹڈ، اتفاق ٹیکسٹائل ملز لمیٹڈ، حمزہ سپننگ ملز، برادرز ٹیکسٹائل ملز، رمضان بخش ٹیکسٹائل ملز اور خالد سراج انڈسٹریز(پرائیویٹ)لمیٹڈ شامل ہیں جبکہ حسن نواز 2کمپنیوں محمد بخش ٹیکسٹائل ملز لمیٹڈ اور حمزہ سپننگ ملز میں شیئرز ہولڈر ہیں۔اس حوالے سے ایس ای سی پی کے ترجمان نے بتایا ہے کہ ہمیں ابھی تک عدالتی حکم نہیں ملا ہے لیکن ہم عدالت کے احکامات پر مکمل عمل کریں گے۔ایس ای سی پی ذرائع نے بتایا کہ نواز شریف کے صاحبزادوں کے مختلف کمپنیوں میں شیئرز کے حوالے سے تیاری کی جارہی ہے۔اس بارے میں حکام نے کہاہے کہ ایس ای سی پی کی جانب سے جو فہرست تیاری کی گئی ہے وہ تمام کمپنیاں سٹاک مارکیٹ کی کمپنیوں کی فہرست میں بھی شامل نہیں ہیں،ان تمام کمپنیوں کے ہیڈ آفس بھی لاہور میں واقع ہیں۔عدالتی حکم نامہ موصول ہونے کے بعد کمیشن کے سربراہ لاہور میں کمپنیوں کی رجسٹریشن آفس کو اس حوالے سے مراسلہ لکھیں گے جس میں احتساب عدالت کے 31اکتوبر 2017 کے فیصلے کی روشنی میں آگاہ کیا جائے گا کہ حسن نواز اور حسین نواز کی جانب سے موصول ہونے والا کمپنیوں کا کوئی بھی ریکارڈ، ملکیت میں تبدیلی نہیں کیا جائے۔تاہم ایس ای سی پی حکام کا اس حوالے سے کہنا تھا کہ اگر کمیشن کو پرانی تاریخوں کی منتقلی یا پھر ریکارڈ میں تبدیلی کے ثبوت حاصل ہوگئے تو کمیشن اس معاملے میں انکوائری کرے گا۔

ایس ای سی پی

مزید : صفحہ اول