گوادر کو صاف پانی کی فراہمی میں 10 ارب ضائع، سینیٹ کو بریفنگ

گوادر کو صاف پانی کی فراہمی میں 10 ارب ضائع، سینیٹ کو بریفنگ

اسلام آباد ( آن لائن ) سینیٹ میں وقفہ سوالات کے دوران وفاقی وزیر برائے منصوبہ بندی و ترقی چوہدری احسن اقبال نے بتایا کہ گزشتہ حکومت کے دور میں گوادر میں پینے کے صاف پانی کی فراہمی کے منصوبے کے لئے 10 ارب روپے دیئے گئے۔ متعلقہ محکمے اس پیسے کے استعمال کے حوالے سے انکوائری کر رہے ہیں۔ یہ منصوبہ ٹھیک نہیں چلا اور پیسے ضائع کردیئے گئے۔ توقع ہے متعلقہ ادارے اس معاملے کی شفاف تحقیقات کریں گے۔ وزارت منصوبہ بندی و ترقی تحقیقاتی ادارہ نہیں۔ ڈپٹی چیئرمین نے یہ معاملہ متعلقہ کمیٹی کو بھجوا دیا۔ 70 سالوں کی محرومی کو فوری دور نہیں کیا جاسکتا۔ گوادر میں پانی کے مسئلے کو حل کیا جارہا ہے۔ سینیٹر عثمان کاکڑ کے سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ ہر چیز کو تعصب کی نظر سے نہ دیکھا جائے۔ بجلی کے منصوبے پشتون‘ بلوچ‘ پنجابی‘ سرائیکی‘ سندھی علاقہ ہونے کی بنیاد پر نہیں لگائے جاتے۔ داسو ڈیم سے جو بجلی پیدا ہوگی وہ پورے ملک کے لئے ہوگی۔ سینیٹر طلحہ محمود کے سوال کے جواب میں وفاقی وزیر احسن اقبال نے کہا کہ ساہیوال کول پلانٹ محفوظ پلانٹ ہے۔ جامشورو میں بھی پلانٹ میں یہ کریٹیکل ٹیکنالوجی استعمال کی گئی ہے۔ یہ ماحول دوست ٹیکنالوجی ہے۔ نیپرا پبلک ہیئرنگ کے بعد ٹیرف مقرر کرتا ہے۔

سینیٹ بریفنگ

مزید : علاقائی