نہ سوگوار رہے اور نغمہ باری ہماری فطرت تھی ،ہم بہرحال نغمہ بار رہے

نہ سوگوار رہے اور نغمہ باری ہماری فطرت تھی ،ہم بہرحال نغمہ بار رہے

اسلام آباد (آن لائن)وفاقی وزیر موسمیاتی تبدیلی اور مسلم لیگ( ن )کے رہنما سنیٹر مشاہد اللہ خان نے پاکستان مسلم لیگ کے صدر سابق وزیر اعظم نواز شریف کی آمد پر بینظیر انٹرنیشنل ائیر پورٹ کے باہر خیر مقدمی اشعار پڑھ کر نواز شریف کو خوش آمدید کہا اور اپنے جذبات کا اظہار کیا ۔ انہوں نے کہا نہ سوگوار رہے اور نغمہ باری ہماری فطرت تھی ،ہم بہرحال نغمہ بار رہے۔دوسروں کو سکھا دیا جینا اور خود موت کو بھی ترسے۔ہم خزاں بخت ہر گلشن پر، بن کے ابرے بہار برسے۔اور اے شب زندگی کی تابانی،دے دعا ہم سے کج دماغوں کو، جن نے خود بجھ کے کردیا روشن ، کتنے بجھتے ہوئے چراغوں کو۔اور زندگی کے سلگتے ہوئے ہونٹوں پر ایک تبسم کی طرح لہرائے ،ہم پہ دنیا نے پھینکے انگارے ،ہم نے دنیا پر پھول برسائے۔اور مرتے مرتے بھی خوشک ہونٹوں پر ،خندہ جاں فزائیں مچلا ہے، زہر کے گھونٹ ہم نے پی پی کر ،اکثر آب حیات اگلا ہے۔

مشاہد اشعار

مزید : علاقائی