پاک چین کے اشتراک سے انڈسٹریل زون کا قیام عمل میں لایا جائیگا:اسد قیصر

پاک چین کے اشتراک سے انڈسٹریل زون کا قیام عمل میں لایا جائیگا:اسد قیصر

پشاور(سٹاف رپورٹر)سپیکر خیبر پختونخوا اسمبلی اسدقیصر نے کہا ہے کہ پاکستان اور چین کے اشتراک سے کرنل شیر خان انٹرچینج کے قریب انڈسٹریل زون کا قیام عمل میں لایا جارہا ہے جس میں 20لاکھ نوجوانوں کو روزگارکے مواقع میسر آئیں گے ۔سابقہ اے این پی حکومت کے قائم کردہ کرپشن کے بازاراور جنگل کے قانون کا خاتمہ کرکے صوبہ میں انصاف اور میرٹ کے نظام کا قیام عمل میں لاکرحقیقی معنوں میں عوامی حکومت قائم کی انہوں نے ان خیالات کا اظہار ضلع صوابی کے علاقہ بوکومیں عوامی اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔اس موقع پر ریاض خان نے سینکڑوں ساتھیوں سمیت پی ٹی آئی میں شمولیت کا اعلان کیا ۔سپیکر نے کہا کہ موٹروے پر کرنل شیر خان انٹرچینج کے قریب انڈسٹریل زون قائم کیا جارہاہے جس کے باعث 20لاکھ نوجوانوں کو روزگار ملے گااور علاقے میں خوشحالی آئے گی ۔صوابی کے لوگوں کو روزگار کیلئے بیرون ملک سفر کی صعوبتیں برداشت نہیں کرنا پڑیں کی ۔انہوں نے کہا کہ ملک میں انصاف اور میرٹ کے ساتھ ساتھ کرپشن سے پاک نظام قائم ہوجائے اور لوٹ مارکرکے پیسہ بیرونی ملک منتقل ہو نا بند ہو جائے تو نوجوانوں کو اپنے ملک میں کافی حدتک روزگار مل سکتاہے ۔انہوں نے کہا کہ سابقہ اے این پی حکومت اپنے دور حکومت میں کرپشن کا بازار گرم کر نے کے ساتھ ساتھ جنگل کا قانون نافذکیا ہوا تھا جس سے عوام کا استحصال ہو رہا تھا پاکستان تحریک انصاف نے حقیقی معنوں میں عوامی حکومت کا قیام عمل میں لایا اور اب حقدار کو اس کا حق مل رہا ہے کسی کی حق تلفی کا کوئی سوچ بھی نہیں سکتا۔انہوں نے کہا کہ اپنی بہتر کارکردگی کی بنیاد پر پاکستان تحریک انصاف آئندہ صوبہ اور مرکزدونوں میں حکومتیں قائم کرے گی اور عمران خان ملک کے وزیر اعظم ہوں گے۔ انہوں نے کہا کہ گدون انڈسٹریل زون میں ایکسٹینشن کی جائے گی جس سے لوگوں کو روزگار کے مزید مواقع ملیں گے انہوں نے بتایا کہ گدون میں 70کروڑ کی لاگت سے سڑکوں کی تعمیر کی جارہی ہے جس سے گردونواح کے نوجوانوں کو گدون میں آمدورفت بہترین ذرائع میسرہوں گے ۔سپیکرنے بتایا کہ پیہور ہائی لیو ل کینال میں بھی حکومت ایکسٹینشن کر رہی ہے جس کے باعث علاقہ کی تمام زمینوں کو وافر مقدار میں پانی ملے گا اور کسان خوشحال ہو گا ۔سپیکر نے کہا کہ این اے 13کے ہر گاؤں اور ہر گھر کو سوئی گیس کی سہولت فراہم کی جائے گی ۔جس کے لئے انہوں نے فنڈز مختص کردیئے ہیں۔سپیکر نے کہا کہ جن لوگوں نے شریعت کے نام پر ووٹ لئے انہوں نے اپنے سابقہ پانچ سالہ دور حکومت میں کوئی ایک بھی اسلامی قانون پاس نہیں کیا ۔بلکہ محض زبانی جمع خرچ پر ہی کام چلاتے رہے ۔جبکہ صوبائی حکومت نے سود ی کاروبار کی بیخ کنی کیلئے سودکے خلاف قانون سازی کرکے غیر اسلامی کاروبار سے منسلک افراد کیلئے سزائیں مقرر کیں نیز سکولوں میں ناظرہ قرآن اورترجمعہ قرآن کا نظام رائج کیا ۔

مزید : پشاورصفحہ آخر