3 انگوٹھے اور 3 انگلیاں۔۔۔ کھدائی کے دوران سائنسدانوں کو انتہائی پراسرار لاشیں مل گئیں، یہ کونسی مخلوق ہے؟ جان کر آپ کے بھی ہوش اُڑجائیں گے

3 انگوٹھے اور 3 انگلیاں۔۔۔ کھدائی کے دوران سائنسدانوں کو انتہائی پراسرار ...
3 انگوٹھے اور 3 انگلیاں۔۔۔ کھدائی کے دوران سائنسدانوں کو انتہائی پراسرار لاشیں مل گئیں، یہ کونسی مخلوق ہے؟ جان کر آپ کے بھی ہوش اُڑجائیں گے

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

لیما(مانیٹرنگ ڈیسک) جنوبی امریکہ کے ملک پرو(Peru)میں کھدائی کے دوران ماہرین کو ایسی پراسرار مخلوق کی باقیادت مل گئی ہیں کہ جان کر آپ کے ہوش اڑ جائیں گے۔ ڈیلی سٹار کی رپورٹ کے مطابق پرو کے شہر نیزاکا میں کھدائی کے دوران ملنے والے ان ڈھانچوں کی ہاتھوں میں تین انگلیاں اور تین انگوٹھے ہیں۔یہ دریافت رواں سال کے آغاز میں ہوئی تھی اور اب فرانزک میڈیسن کے ماہر ڈاکٹر جوز بینٹز اور ڈاکٹر ایڈیسن ویوانکو نے ان ہڈیوں کا تجزیہ کرکے حتمی نتائج میں حیران کن انکشاف کر دیا ہے کہ یہ باقیات خلائی مخلوق کی ہیں۔

گجرات میں سائنسدانوں کو 15 کروڑ سال پرانی ایسی چیز مل گئی کہ کبھی خوابوں میں بھی نہ سوچا تھا، دیکھنے والے ہر شخص کا منہ کھلا کا کھلا رہ گیا

رپورٹ کے مطابق ڈاکٹر جوز کا کہنا تھا کہ ”ان ڈھانچوں میں کئی ایسی نادر چیزیں ہیں جو انسانی ڈھانچوں سے یکسر مختلف ہیں۔ پہلی نظر میں یہ انسانی ڈھانچے ہی لگتے ہیں لیکن جب ہم نے ان کا تجزیہ کیا تو کئی پراسرار پہلومنکشف ہوئے۔ مثال کے طور پر ان کے سر انسانوں کی نسبت بہت بڑے، آنکھوں کے سوراخ بہت زیادہ چوڑے اور ناک بہت چھوٹی تھی اور ان کے کان بالکل نہیں تھے۔ان کی ریڑھ کی ہڈی کے جوڑ بھی انسانوں کی نسبت بہت کم تھے اور ہڈیوں کا سٹرکچر بھی بہت مختلف اور چوڑا تھا۔ ان کے ہاتھوں میں صرف تین انگلیاںاور تین انگوٹھے تھے۔یہ وہ چیزوں تھی جو ان میں انسانوں کی نسبت نمایاں طور پر مختلف تھیں۔ اس کے علاوہ ان کی انگلیوں کے جوڑ اور ناخنوں کی ساخت بھی مختلف تھی۔ ان پر اگر گہرائی میں جا کر تحقیق کی جائے تو کوئی تاریخ ساز دریافت ہو سکتی ہے۔یہ کسی ایسی چیز کے ڈھانچے ہیں جو ایک ہی وقت میں انسانوں سے مشابہہ اور ان سے یکسر مختلف بھی تھی۔ چنانچہ ہم یقین سے کہہ سکتے ہیں کہ یہ خلائی مخلوق کے ڈھانچے ہیں۔“

مزید : ڈیلی بائیٹس