فوجی چیک پوسٹ پر بھیڑوں سے بھری پک اپ گاڑی کی آمد، لیکن جیسے ہی فوجی نے ایک بھیڑ کو ہاتھ لگایا تو ایسا انکشاف کہ سب کی دوڑیں لگ گئیں کیونکہ اس میں۔۔۔

فوجی چیک پوسٹ پر بھیڑوں سے بھری پک اپ گاڑی کی آمد، لیکن جیسے ہی فوجی نے ایک ...
فوجی چیک پوسٹ پر بھیڑوں سے بھری پک اپ گاڑی کی آمد، لیکن جیسے ہی فوجی نے ایک بھیڑ کو ہاتھ لگایا تو ایسا انکشاف کہ سب کی دوڑیں لگ گئیں کیونکہ اس میں۔۔۔

  

دمشق(مانیٹرنگ ڈیسک) انسان تو خود کش حملے کرتے ہی تھے، اب بھیڑیں بھی یہ کام کیا کریں گی۔ شام میں ایک فوجی چیک پوسٹ پر پیش آنے والے واقعے سے تو یہی لگتا ہے۔ وہاں ایک ایسی بھیڑ پکڑ لی گئی ہے جس کے جسم میں بارود بھرا گیا تھا تا کہ اسے خودکش حملے کے لئے استعمال کیا جا سکے۔

ویب سائٹ ’ایران فرنٹ پیج‘ کے مطابق سکیورٹی اہلکاروں نے بھیڑوں سے بھری ایک گاڑی کو روکا اور اس کی تلاشی کا عمل شروع کر دیا۔ ایک اہلکار جب گاڑی کے گرد بارودی مواد کا پتا چلانے والا سینسر لے کر گھوم رہا تھا تو اسے گڑ بڑ کا احساس ہوا۔ گاڑی کے اندر تو کچھ نا ملا البتہ ایک بھیڑ کے قریب لے جانے پر سینسر کی سیٹی بجنا شروع ہو گیا۔ پتا چلا یہ بھیڑ ہی دراصل ایک تباہ کن بم تھی، کیونکہ دہشت گردوں نے اس کے جسم میں بارودی مواد داخل کر رکھا تھا۔

’13 سال کی عمر میں اسامہ بن لادن کو برطانیہ میں اس جگہ لیجایا گیا جو اس کی مغربی دنیا سے نفرت کی بنیاد بنا‘ اسامہ بن لادن کو دراصل مغربی ممالک سے کیا مسئلہ تھا؟ کئی دہائیوں بعد بالآخر اصل حقیقت سامنے آگئی

اس سے پہلے دمشق شہر میں بھی اسی طرح کا ایک واقعہ پیش آ چکا ہے۔ سکیورٹی اہلکاروں نے ایک چیک پوسٹ پر ایک گائے کا پتا چلایا تھا جس کے جسم میں بھاری مقدار میں بارود چھپایا گیا تھا۔ اس بارودی مواد کو دمشق میں دھماکوں کے لئے لے جایا جا رہا تھا۔

مزید : بین الاقوامی