نشتر جمنز یم ڈیڑھ سال سے بند ، مشینری خراب ہونیکا انکشاف

نشتر جمنز یم ڈیڑھ سال سے بند ، مشینری خراب ہونیکا انکشاف

ملتان ( وقائع نگار)نشترمیڈیکل یونیورسٹی و ہسپتال انتظامیہ کی عدم توجہی کے باعت لاکھوں روپے مالیت سے تیار ہونے والا جمنیزیم گزشتہ ڈیڑھ سال سے بند پڑا ہے۔جس کے بعد (بقیہ 35نمبرصفحہ7پر )

جمنیزیم میں پڑی مشینں خراب ہوگئی ہیں۔واضح رہے سابق پرنسپل پروفیسر ڈاکٹر کامران سالک نے اپنے دور میں نشتر ہسپتال کے اقبال ہاسٹل کے فرسٹ فلور پر جمنزیم کو تیار کروایا۔اور وہاں قمیتی مشینری کو رکھوایا گیا۔ذرائع کا کہنا ہے کہ ہسپتال انتظامیہ نے ڈاکٹروں کیلئے جمنزیم کے چارجز ایک ہزار سے پندرہ سو روپے رکھے ہوئے تھے۔ اور یہی وجہ بتائی جارہی ہے کہ جمنیزیم کے چارجز زیادہ ہونے کی وجہ سے ڈاکٹروں نے انا چھوڑ دیا ہے۔اور ساتھ یہ بھی کہنا ہے مشینری کی خرابی صورت میں فنڈز کی عدم دستیابی بھی جمنیزہم نہ چلنے کی اہم وجہ بنی ہوئی ہے۔ڈاکٹروں نے جمنزیم کو دوبارہ فعال کرنے کا ہسپتال انتظامیہ سے مطالبہ کیا ہے۔

نشتر جمنیزیم

مزید : ملتان صفحہ آخر