تبدیلی کے دعوے دھرے کے دھرے ، سرکاری اداروں میں سیاسی مداخلت بڑھ گئی ، اعزازی چیئر مینوں کے ’’وارے نیارے‘‘

تبدیلی کے دعوے دھرے کے دھرے ، سرکاری اداروں میں سیاسی مداخلت بڑھ گئی ، اعزازی ...

بہاولپور(ڈسٹرکٹ رپورٹر)حکومت پنجاب کی طرف سے بورڈز کے قیام کی منظوری کے بغیر35 اعزاز چیئرمینوں کی تعیناتی متعلقہ اتھارٹیز کے افسران اورعملہ کیلئے وبال جان بن گئے اعلی افسران کے دفاتر پرقبضہ ٹیلی فون سرکاری گاڑیوں اوردیگروسائل کاغیرقانونی طورپربے دریغ استعمال سیاسی مداخلت سے بیوروکریسی بھی عاجز آگئی تفصیل کے مطابق حکومت پنجاب نے اپنے سیاسی رہنماؤں کونوازنے کی خاطر پنجاب بھرکے اداروں ایل ڈی اے ، ایم ڈی (بقیہ نمبر24صفحہ12پر )

بی ڈی اے، پی ایچ اے ، ویسٹ مینجمنٹ کمپنیز اوردیگر میں35 افراد کی بطوراعزازی چیئرمین تعیناتیاں کی ہیں بہاولپورمیں پی ایچ اے کی چیئرپرسن شہلااحسان اوربی ڈی اے کے چیئرمین ملک محمدعامرتعینات کیے گ ئے ہیں جبکہ ان اداروں میں بوڈز کاقیام عمل میں نہ لایاگیاہے باوثوق ذرائع نے بتایاہے کہ ملک محمدعامر نے بی ڈی اے میں ڈائریکٹرجنرل کے دفتر پرغیرقانونی طورپر قبضہ جمارکھاہے سرکاری ٹیلی فون کابے دریغ استعمال کیاجارہاہے اورسارادن پی ٹی آئی کے ورکرز وہا ں پرموجودرہتے ہیں اسی طرح پی ایچ اے کی چیئرپرسن شہلااحسان نے بھی وہی سلسلہ شروع کیاہواہے انہوں نے پی ایچ اے کے ڈی جی( ڈپٹی کمشنر)بہاولپورکے دفتر پرقبضہ کررکھاہے وہاں پران کے بچے خواتین اوردیگرافراد موجود رہتے ہیں اوروہ سرکاری وسائل کوبے دردی سے لوٹ رہے ہیں واضح رہے کہ چندروزقبل ڈپٹی کمشنر نے پی ایچ اے کے دفترمیں جاکرشہلااحسان سے قبضہ چھڑالیاتھااوروہ کافی دیر تک وہاں بیٹھ کردفتری اموربھی نمٹاتے رہے لیکن ان کے واپس جانے پردوبارہ وہی سلسلہ شروع ہے جس پرعوامی وسماجی حلقوں نے تشویش کااظہارکرتے ہوئے کہاہے کہ عمران خان نے توسرکاری اداروں میں سیاسی مداخلت بندکرنے کااعلان کیاتھالیکن اس کے الٹ ہورہاہے انہوں نے اس عمل کوپی ٹی آئی کی حکومت کی ناکامی قراردیاہے۔

مداخلت

مزید : ملتان صفحہ آخر