پاکستان اور کوریا میں تجارت کو فروغ دینے کی وافر گنجائش ہے ،لاہورچیمبر

پاکستان اور کوریا میں تجارت کو فروغ دینے کی وافر گنجائش ہے ،لاہورچیمبر

لاہور (کامرس رپورٹر)لاہور چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے نائب صدر فہیم الرحمن سہگل نے کہا ہے کہ پاکستان اور کوریا کے درمیان تجارت کو فروغ دینے کی وافر گنجائش ہے جس سے دونوں ممالک کے تاجروں کو مل کر فائدہ اٹھانا چاہیے۔ کوریا کے تاجر جونگ وو لی سے لاہور چیمبر میں ملاقات کے موقع پر فہیم الرحمن سہگل نے کہا کہ دونوں ممالک کی حکومتوں کو ان رکاوٹوں کو دور کرنا چاہیے جو باہمی تجارت کو متاثر کررہی ہیں۔ انہوں نے مثال دیتے ہوئے بتایا کہ کوریا میں پاکستان سے گلووز اور لیدر کی درآمد پر بالترتیب تیرہ فیصد اور اعشاریہ پانچ فیصد امپورٹ ڈیوٹی عائد ہے جبکہ کوریا میں ان ہی مصنوعات کی بھارت، ویتنام، بنگلہ دیش اور انڈونیشیا سے درآمد پر کوئی ڈیوٹی نہیں، کوریا کی حکومت پر زور دیا جائے کہ وہ اس تفاوت کو دور کرکے باہمی تجارت میں اضافہ کرے۔ انہوں نے کہا کہ دونوں ممالک کے درمیان تجارت بڑھانے کی گنجائش ہے، پاکستان میں کورین کمپنیوں کی کامیابیوں کو دیکھتے ہوئے یہ باآسانی یہ نتیجہ اخذ کیا جاسکتا ہے کہ جلد ہی کوریا پاکستان میں تجارت و سرمایہ کاری کرنے والا بڑا ملک بن جائے گا۔ لاہور چیمبر کے نائب صدر نے کہا کہ تجارتی فورمز دوطرفہ تجارت کے فروغ میں اہم کردار ادا کرسکتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ تجارتی حجم بڑھانے کے لیے دونوں ممالک کو تجارت کے قابل نئی مصنوعات متعارف کرانی چاہئیں۔

۔ انہوں نے کورین سفیر کو پاک چین اکنامک کاریڈور پر ہونے والی پیش رفت سے آگاہ کرتے ہوئے کہا کہ یہ منصوبہ خطے میں ترقی و خوشحالی لیکر آئے گا جبکہ کوریا کے لیے بھی تجارت و سرمایہ کاری کے نئے مواقع پیدا ہونگے۔ انہوں نے دونوں ممالک کے چیمبرز آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے درمیان مستقل روابط اور تجارتی معلومات کے تبادلے کی ضرورت پر بھی زور دیا۔

مزید : کامرس