وزیرصحت پنجاب کی زیر صدارت مشاور تی ور کشاپ، ہیلتھ ریفارمزکیلئے سفار شات پیش

وزیرصحت پنجاب کی زیر صدارت مشاور تی ور کشاپ، ہیلتھ ریفارمزکیلئے سفار شات پیش

لاہور ( جنرل رپورٹر)وزیر صحت پنجاب ڈاکٹر یاسمین راشد کی زیرصدارت 2روزہ مشاورتی ورکشاپ کے اختتامی روز ماہرین نے دورس ہیلتھ ریفارمز کے لئے کئی اہم سفارشات پیش کی ہیں جو فیملی پلاننگ، ماں اور بچے کی صحت اور ہیلتھ مراکز کی بہتری سے متعلق ہیں۔ مشاورتی گروپس نے زور دیا کہ کم عمر کی شادیاں روکنے کے لئے موثر قانون سازی نہایت ضروری ہے۔ پاکستان کو میڈیکل سٹاف کی کمی کے مسئلے سے فوری نمٹنا ہوگا۔ وزیر بہبود آبادی کرنل (ر) محمد ہاشم ڈوگر، سیکرٹری ہیلتھ ثاقب ظفر، سپیشل سیکرٹری محمد خان رانجھا، ڈی جی ہیلتھ ڈاکٹر منیر احمد سمیت معروف پالیسی ساز شخصیات نے بھی شرکت کی۔ورکشاپ کا موضوع ’قومی ہیلتھ پالیسی کی تیاری اور صوبائی سٹرٹیجک فریم ورک کی ترقی ‘تھا۔ماہرین صحت نے اپنی سفارشات میں کہا کہ آبادی میں بڑھتا اضافہ ٹھوس اقدامات کا متقاضی ہے۔ آبادی بے ہنگم انداز میں بڑھتی رہے تو وسائل سکڑ جاتے ہیں۔ ماہرین نے نوٹ کیا کہ ماں اور بچے کی صحت بہتر بنا کر شعبہ صحت کے کئی اہداف آسانی سے حاصل کئے جاسکتے ہیں لہذا زچہ بچہ مراکز میں موجود آلات کو فعال رکھنا ہوگا۔شعبہ صحت کے استحکام کے لئے مضبوط سیاسی عزم بھی ناگزیر ہے۔ ڈاکٹر یاسمین راشد نے اختتامی خطاب میں ماہرین کی سفارشات کا خیرمقدم کرتے ہوئے اعلان کیا کہ پنجاب حکومت اٹک، بھکر، میانوالی اور راجن پور میں ’’ماں بچہ ہسپتال‘‘ قائم کرے گی۔ دسمبر سے ہیلتھ انشورنس سکیم کا آغاز کردیا جائے گا اور اس کا دائرہ کار 36 اضلاع تک پھیلایا جائے گا۔ ہیلتھ کارڈ کے تحت ہر غریب خاندان کو 3 لاکھ 70ہزار روپے کی ہیلتھ کوریج دی جائے گی۔ ان سفارشات کو عملی شکل میں ہیلتھ اصلاحات کا حصہ بنائیں گے۔ لیڈی ہیلتھ ورکرز کے شعبے کو نئی زندگی دیں گے ۔ وزیر بہبود آبادی ہاشم ڈوگر نے وزیر صحت کی محنت اور جذبے کی زبردست الفاظ میں تعریف کرتے ہوئے کہا کہ میں نے ڈاکٹر یاسمین راشد جیسی بہادر اور محنتی خاتون زندگی بھر نہیں دیکھی۔ وزیراعظم نے ان کو پنجاب کا وزیر صحت بنا کر سیاسی بصیرت کا ثبوت دیا۔ محکمہ صحت اور محکمہ پاپولیشن ویلفیئر مل کر بہبود آبادی کے منصوبوں کو کامیابی سے ہمکنار کریں گے۔سیکرٹری ہیلتھ ثاقب ظفر نے کہا کہ آج کا دن عام دن نہیں بلکہ یہ ہیلتھ پالیسی کی تیاری کی جانب پہلا قدم ہے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1