مولانا سمیع الحق : قاتلانہ حملے میں شہید ، نامعلوم قاتلوں نے گھر میں گھس کر چاقو کے وار کئے ، نماز جنازہ آج اکوڑہ خٹک میں اداکی جائے گی

مولانا سمیع الحق : قاتلانہ حملے میں شہید ، نامعلوم قاتلوں نے گھر میں گھس کر ...

راولپنڈی(سٹی رپورٹر) جمعیت علمائے اسلام (س) اور دفاع پاکستان کونسل کے سربراہ مولانا سمیع الحق قاتلانہ حملے میں شہید،راولپنڈی میں ان کے گھر پر نامعلوم افراد نے حملہ کرتے ہوئے چاقوؤں کے وار سے انہیں شہید کر دیا ہے ، اُنکی نماز جنازہ دارالعلوم حقانیہ اکوڑہ خٹک میں ادا کی جائیگی ، واقعات کے مطابق گزشتہ روز مولاناراولپنڈی میں واقعہ اپنے گھر پر آرام کر رہے تھے کہ نامعلوم افراد نے گھر میں گھس کر چاقوؤں کے وار کر کے مولانا کو شہید کر دیا ،ان کے محافظ اور ڈرائیور مکان سے باہر گئے ہوئے تھے اور جب وہ واپس آئے تو مولانا سمیع الحق خون میں لت پت تھے،انہیں فوری طور پر اُنکی رہائش گاہ کے قریب نجی ہسپتال میں لیجایا گیا لیکن وہ جانبر نہ ہو سکے ، مولانا کی شہادت کی اطلاع ملتے ہی وفاق المدارس العربیہ کے سنیئر راہنما قا ضی عبدالرشید،سابق ڈپٹی چیئرمین سینٹ مولانا عبدالغفور حیدری،جنرل (ر) حمید گل کے بیٹے عبداللہ گل سمیت بڑی تعداد میں علماء کرام ،دینی مدارس کے طلباء اور مقامی سیاسی سماجی شخصیات بھی بڑی تعداد میں ہسپتال کے باہر پہنچ گئے ،جب مولانا سمیع الحق کا جسد خاکی باہر لایا گیا تو اُس وقت اُن کے رفقاء نے بھر پور نعرے بازی کی اور اس موقع پر علماء کرام نے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ مولانا کا قتل ایک بین الاقوامی سازش کا نتیجہ ہے اور مولانا نے ہمیشہ اسلام کی سر بلندی اور ملک میں قرآن و سنت کے نفاذ کیلئے جدو جہد کی ایک ایسے موقع پر جب پورے ملک کے اندر گستاخ رسول کے خلاف احتجاج ہو رہا ہے اس موقع پر مولانا کو قتل کر کے پوری اُمت مسلمہ کو سوگوار کر دیا،مولانا کے جسد خاکی کو پوسٹ مارٹم کے بعد ایک بڑے جلوس کی شکل میں اُنکے آبائی رائشگاہ دارالعلوم حقانیہ اکوڑہ خٹک منتقل کر دیا گیا اور اُن کی نمازے جنازہ آج ادا کی جائیگی اور اُن کو اُن کے والد کے پہلو میں دفن کیا جائیگا، مولانا سمیع الحق کی عمر 80 برس سے زیادہ تھی اور وہ 1988 سے دارالعلوم حقانیہ کے سربراہ تھے جہاں سے ہزاروں علما نے دینی تعلیم حاصل کی ہے۔مولانا سمیع الحق جمیعت علما اسلام (س) اور دفاع پاکستان کونسل کے سربراہ تھے،دریں اثنامحکمہ انسداد دہشت گردی (سی ٹی ڈی) نے مولانا سمیع الحق کے قتل کی ابتدائی تحقیقاتی رپورٹ جاری کردی۔ سی ٹی ڈی کی جانب سے جاری کی جانے والی رپورٹ میں بتایا گیا کہ ادارے نے فرانزک لیبارٹری کے ساتھ مل کر موقع سے شواہد محفوظ کرلیے۔ان کا کہنا تھا کہ مولانا سمیع الحق پر حملہ تقریباً ساڑھے 6 بجے کیا گیا جب وہ راولپنڈی میں بحریہ ٹاؤن کے سفاری ولاز میں اپنی رہائش گاہ پر اکیلے تھے۔انہوں نے بتایا کہ معروف عالم دین کے ملازم گھر سے سودا سلف لینے کے لیے باہر گئے تھے رپورٹ میں بتایا گیا کہ مولانا سمیع الحق پر حملے میں صرف چاقو کا استعمال کیا گیا ہے۔سی ٹی ڈی ترجمان کا کہنا تھا کہ جائے وقوع کو سیل کرکے شواہد کو محفوظ کرلیا گیا ہے جس سے تفتیش کے دائرہ کار کو وسیع کیا جائے گا۔۔ وزیراعظم عمران خان ، صدر مملکت عارف علوی ،گور نر پنجاب چوہدری محمدسرور نے جے یوآئی (س ) کے سر براہ مولانا سمیع الحق کے قتل پر اظہار افسوس کیا ہے۔ جمعہ کے روز جاری اپنے بیان میں گور نر پنجاب چوہدری محمدسرور نے کہا کہ امن کے قیام اور مذہبی ہم آہنگی کے فروغ کیلئے مولانا سمیع الحق کی خدمات کو ہمیشہ یاد رکھا جائیگا ہم غم کی اس گھڑی میں مولانا سمیع الحق کے خاندان کے غم میں برابر کے شر یک ہیں پولیس سمیت تمام ادارے قاتلوں کی فوری گر فتاری یقینی بنانے کیلئے اقدامات کر رہے ہیں ۔وزیراعظم عمران خان نے سربراہ جے یوآئی (س) مولا ناسمیع الحق پر حملے کے نتیجے میں ان کی شہادت کی شدید مذمت کی ہے۔وزیراعظم عمران خان نے اپنے بیان میں کہا کہ مولانا سمیع الحق کی شہادت سے ملک جید عالم دین اور اہم سیاسی رہنما سے محروم ہوگیا۔انہوں نے کہا کہ مولانا سمیع الحق کی دینی اور سیاسی خدمات کو ہمیشہ یاد رکھا جائے گا، وزیراعظم نے مولانا سمیع الحق پر حملے کے واقعے کی رپورٹ طلب کرلی۔وزیراعظم عمران خان نے واقعے کی فوری تحقیقات اور ذمے داران کا تعین کرنے کی ہدایت کردی۔خیال رہے کہ وزیراعظم عمران خان اس وقت چین کے سرکاری دورے پر ہیں جنہیں مولانا سمیع الحق پر حملے کے حوالے سے آگاہ کیا گیا۔سابق وزیر اعظم میاں نواز شریف اور اپوزیشن لیڈر شہباز شریف ، جییو آئی ف کے راہنما مولانا فضل الرحمٰن چودھری شجاعت حسین ، چودھری پرویز الٰہی نے بھی مولانا سمیع الحق کی شہادت پر دکھ اور افسوس کا اظہار کیا ہے آرمی چیف نے مولانا سمیع الحق کی شہادت پر گہرے دکھ کا اظہار کرتے ہوئے ان کے خاندان سے تعزیت کی ہے۔آرمی چیف جنرل قمر جاوید نے مولانا سمیع الحق پر قاتلانہ حملے کی شدید مذمت کی ہے۔ آئی ایس پی آر کے مطابق آرمی چیف نے مولانا سمیع الحق کی شہادت پر دکھ کا اظہار کرتے ہوئے ان کے خاندان سے دکھ اور ہمدردی کا اظہار کیا ہے۔

سمیع الحق

مزید : صفحہ اول