حکومت نے 6نکاتی ایجنڈے پر عملدرآمد نہ کیا تو راہیں جدا کرلینگے : اخترمینگل

حکومت نے 6نکاتی ایجنڈے پر عملدرآمد نہ کیا تو راہیں جدا کرلینگے : اخترمینگل

کوئٹہ (آن لائن)بلوچستان نیشنل پارٹی کے سربراہ سردار اختر مینگل نے کہا ہے کہ پارلیمنٹ میں مسنگ پرسن کی 5ہزار سے زائد کی لسٹ پیش کی ہے حکومت نے ہمارے 6نکاتی ایجنڈے پر عملدرآمد کیلئے ایک سال کا وقت دیا ہے اس ایک سال میں تمام مسائل حل نہ ہوئے اور جبری گمشدگیوں کاسلسلہ نہ روکا تو وفاقی حکومت سے راہیں جدا کر نے سمیت اہم فیصلے کریں گے ملک میں احتساب کے نام پر صرف سیاستدانوں کا نہیں بلکہ دوسرے لوگوں کا احتساب بھی کیا جائے اگر ایسا نہ کیا گیا تو حالات بہتر نہیں ہونگے ان خیالات کا اظہار انہوں نے بات چیت کرتے ہوئے کیا اختر مینگل نے کہا کہ ڈسٹرکٹ پنجگور کے قریب سے سیکورٹی اداروں نے 70سالہ شخص کو اٹھایا اور ساتھ میں تین خواتین کو بھی غائب کردیا جبری گمشدگیوں کا سلسلہ نئے پاکستان میں بھی جاری ہے جن خاندان کے لوگ لاپتہ ہو جاتے ہیں یہ متاثرہ خاندان ایف آئی آر اور کیسز درج کرانے سے ڈرتے ہیں اداروں کی دھمکیوں سے بلوچستان کے افراد خوفزدہ ہیں اختر مینگل نے انکشاف کیا کہ اداروں کے اہلکار متاثرہ خاندانوں سے لاپتہ افراد کی رہائی کیلئے تاوان طلب کرتے ہیں بعض منشیات کی اسمگلنگ اور اپنے مذموم مقاصد کیلئے انہیں استعمال کر تے ہیں گھروں کو واپس آنے والے لاپتہ افراد اداروں کے سلوک کے بارے میں بتانے سے بھی گریز کرتے ہیں ۔

مزید : صفحہ اول