جمال خشوگی انتہائی خطرناک انتہا پسند تھا : سعودی ولی عہد

جمال خشوگی انتہائی خطرناک انتہا پسند تھا : سعودی ولی عہد

ریاض،پیرس (این این آئی) سعودی ولی عہد محمد بن سلمان نے کہاہے کہ صحافی جمال خشوگی ایک خطرناک انتہا پسند تھا۔ دوسری جانب مقتول جمال کے اہل خانہ نے تردید کرتے ہوئے کہا ہے کہ جمال خشوگی کا تعلق کسی انتہا پسند جماعت سے نہیں تھا۔میڈیارپورٹس کے مطابق سعودی ولی عہد محمد بن سلمان جمال خشوگی کو خطرناک انتہا پسند سمجھتے تھے۔ محمد بن سلمان نے صحافی کے لاپتہ ہونے کے بعد وائٹ ہاؤس میں ہونے والی ایک ٹیلی فونک گفتگو میں اپنے اس خیال کا اظہار کیا۔ امریکی صدر کے داماد جیریڈ کوشنر اور نیشنل سکیورٹی ایڈوائزر جان بولٹن سے فون کال کے دوران محمد بن سلمان کا کہنا تھا کہ خشوگی اخوان المسلمین کے رکن بھی رہے ہیں۔سعودی صحافی جمال خشوگی امریکی اخبار واشنگٹن پوسٹ سے وابستہ تھے اور اپنی تحریروں میں سعودی حکومت کو تنقید کا نشانہ بناتے رہتے تھے۔ سعودی حکومت نے استنبول میں سعودی قونصل خانے میں ان کے قتل کا اعتراف کیا ہے تاہم ان کی باقیات کا پتہ نہیں لگایا جا سکا۔علاوہ ازیں سعودی صحافی جمال خشوگی سمیت تمام صحافیوں کے قتل کو عالمی سطح پر اجاگر کرنے کیلئے ایفل ٹاور کے سامنے صحافیوں کی عالمی تنظیم نے احتجاجی مظاہرہ کیا، مظاہرے کے دوران ایفل ٹاور کی لائٹیں بجھادی گئیں،مظاہرین نے جمال خشوگی قتل کے تمام حقائق منظر عام پر لانے کا مطالبہ کیا۔ دوسری جانب امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو کا کہنا ہے کہ چند ہفتے بعد ملوث افراد کٹہرے میں ہوں گے اور پابندیاں عائد کر دی جائیں گی۔

مزید : صفحہ اول