مولانا سمیع الحق قاتلا نہ حملے میں شہید ، نامعلوم قاتل نے گھر میں گھس کر چاقو کے پے در پے وار کئے جس سے مولانا شدید زخمی ہو گئے اور زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے دم توڑ گئے

مولانا سمیع الحق قاتلا نہ حملے میں شہید ، نامعلوم قاتل نے گھر میں گھس کر چاقو ...

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر ، مانیٹرنگ ڈیسک ، نیوز ایجنسیاں)جمعیت علمائے اسلام (س) کے سربراہ مولانا سمیع الحق پر قاتلانہ حملے میں شہید ہو گئے۔ اطلاعات کے مطابق مولانا سمیع الحق پر قاتلانہ حملہ راولپنڈی میں ان کے گھر میں کیا گیا جس میں زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے شہید ہو گئے۔مولانا سمیع الحق کے صاحبزادے مولانا حامد الحق نے میڈیا کو ٹیلی فون پر بتایا کہ مولانا سمیع الحق پر گھر کے اندر حملہ کیا گیا۔انہوں نے بتایا کہ مولانا سمیع الحق عصر کے بعد اپنے گھر پر آرام کر رہے تھے ،ان کے ڈرائیور اور محافظ کچھ دیر کے لیے باہرگئیاور جب واپس آئے تو مولانا اپنے بستر پر پڑے تھے۔مولانا سمیع الحق کے بیٹے نے بتایا کہ ان کے والد پر چھریوں سے وار کیے گئے۔ذرائع کے مطابق مولانا سمیع الحق کے جسد خاکی کو ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر اسپتال راولپنڈی منتقل کر دیا گیا ہے۔جمعیت علمائے اسلام س پشاور کے صدر مولانا حصیم نے مولانا سمیع الحق کے جاں بحق ہونے کی تصدیق کر دی ہے۔مولانا سمیع الحق دارالعلوم حقانیہ اکوڑہ خٹک کے مہتمم تھے اور پاکستان و افغانستان سمیت مختلف ممالک کے علمائے کرام اس مدرسے سے فارغ التحصیل ہیں۔جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان بھی دارالعلوم حقانیہ اکوڑہ خٹک کے ہی فارغ التحصیل ہیں۔ وزیراعظم عمران خان ، صدر مملکت عارف علوی ،گور نر پنجاب چوہدری محمدسرور نے جے یوآئی (س ) کے سر براہ مولانا سمیع الحق کے قتل پر اظہار افسوس کیا ہے۔ جمعہ کے روز جاری اپنے بیان میں گور نر پنجاب چوہدری محمدسرور نے کہا کہ امن کے قیام اور مذہبی ہم آہنگی کے فروغ کیلئے مولانا سمیع الحق کی خدمات کو ہمیشہ یاد رکھا جائیگا ہم غم کی اس گھڑی میں مولانا سمیع الحق کے خاندان کے غم میں برابر کے شر یک ہیں پولیس سمیت تمام ادارے قاتلوں کی فوری گر فتاری یقینی بنانے کیلئے اقدامات کر رہے ہیں ۔وزیراعظم عمران خان نے سربراہ جے یوآئی (س) مولا ناسمیع الحق پر حملے کے نتیجے میں ان کی شہادت کی شدید مذمت کی ہے۔وزیراعظم عمران خان نے اپنے بیان میں کہا کہ مولانا سمیع الحق کی شہادت سے ملک جید عالم دین اور اہم سیاسی رہنما سے محروم ہوگیا۔انہوں نے کہا کہ مولانا سمیع الحق کی دینی اور سیاسی خدمات کو ہمیشہ یاد رکھا جائے گا، وزیراعظم نے مولانا سمیع الحق پر حملے کے واقعے کی رپورٹ طلب کرلی۔وزیراعظم عمران خان نے واقعے کی فوری تحقیقات اور ذمے داران کا تعین کرنے کی ہدایت کردی۔خیال رہے کہ وزیراعظم عمران خان اس وقت چین کے سرکاری دورے پر ہیں جنہیں مولانا سمیع الحق پر حملے کے حوالے سے آگاہ کیا گیا۔سابق وزیر اعظم میاں نواز شریف اور اپوزیشن لیڈر شہباز شریف ، جییو آئی ف کے راہنما مولانا فضل الرحمٰن نے بھی مولانا سمیع الحق کی شہادت پر دکھ اور افسوس کا اظہار کیا ہے

مولانا سمیع الحق

مزید : کراچی صفحہ اول