حالات کاتقاضہ ہے ہم بھارت کی تصادم پالیسی پر نظرثانی کا انتظار کریں،شاہ محمود

حالات کاتقاضہ ہے ہم بھارت کی تصادم پالیسی پر نظرثانی کا انتظار کریں،شاہ ...

اسلام آباد (آئی این پی) قومی اسمبلی کو وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے آگاہ کیا ہے کہ بھارتی حکومت نے انتخابات کی وجہ سے جارحانہ رویہ اختیار کیا ہوا ہے تاہم حالات کاتقاضہ ہے کہ ہم بھارت کی جانب سے اس کی تصادم کی پالیسی پر نظرثانی کیے جانے کا انتظار کریں کیونکہ بے بنیاد وجوہات پر وزرائے خارجہ کے درمیان ملاقات کی بھارتی منسوخی نے خطے کو امن و ترقی کی راہ پر ڈالنے کا ایک اور موقع ضائع کر دیا ہے۔ قومی اسمبلی میں وقفہ سوالات کے دوران ارکان کے سوالوں کے تحریری جواب میں وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کے جواب میں کہا گیا کہ بیرون ممالک کی جیلوں میں 10 ہزار 811 پاکستانی قید ہیں جن میں سے صرف سعودی عرب کی جیلوں میں 3 ہزار پاکستانی قید ہیں۔انہوں نے کہا کہ ترکی میں پکڑے جانے والے پاکستانی تارکین وطن کی تعداد میں گزشتہ کچھ عرصے میں مسلسل اضافہ دیکھنے میں آیاہے اور صرف 2018 میں یہ تعداد تقریبا 30 ہزار ہے ۔تحریری جواب میں مزید بتایا گیا کہ پاکستان نے افغانستان کے عوام کو 40ہزار ٹن گندم کا تحفہ دیا۔ شاہ محمود قریشی نے اپنے تحریری جواب میں ایوان کو بتایا کہ کمانڈر کلبوشن یادیو کا کیس آئی سی جے میں زیر سماعت ہے،کلبوشن یادیو کے معاملے پر اٹارنی جنرل نے قانونی حکمت عملی مرتب کی ہے ۔

شاہ محمود/تحریری جواب

مزید : کراچی صفحہ اول