گلوکارہ ریشماںکو مداحوں سے بچھڑے5برس بیت گئے،مداحوں کے دلوں میں آج بھی زندہ

گلوکارہ ریشماںکو مداحوں سے بچھڑے5برس بیت گئے،مداحوں کے دلوں میں آج بھی زندہ
گلوکارہ ریشماںکو مداحوں سے بچھڑے5برس بیت گئے،مداحوں کے دلوں میں آج بھی زندہ

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) عالمی شہرت یافتہ اورصحرائے بلبل کے نام سے شہرت پانے والی گلوکارہ ریشماں کو مداحوں سے بچھڑے پانچ برس بیت گئے۔ سالوں تک دنیائے موسیقی پر راج کرنے والی معروف گلوکارہ کے گائے گیت آج بھی کانوں میں رس گھولتے ہیں۔

سریلی ومنفرد آواز کے ساتھ گائیکی کو نئی جہت دینے والی پٹھانی بیگم المعروف ریشماں نے 1947 میں راجستھان میں جنم لیا، 12 برس کی عمر میں ریڈیو پاکستان پر لعل میری گا کر فنی سفر کا آغاز کیا۔

ریشماں نے موسیقی کی باقاعدہ تربیت نہیں لی لیکن 1960 اور 70 کی دہائی میں گائے گیتوں نے انہیں ملک کی مقبول ترین لوک گلوکارہ بنادیا، ریشماں کی آواز میں جو سوز و درد تھا، وہ کسی اور کے حصے میں نہیں آیا۔عالمی شہرت یافتہ عظیم گلوکارہ نے جو گیت بھی گایا اسے دوام بخش دیا، ان کے گانے سننے والے آج بھی جھوم اٹھتے ہیں۔فن موسیقی کےلیے خدمات کے اعتراف میں انہیں صدارتی ایوارڈ برائے حسن کارکردگی اور ستارہ امتیاز سے بھی نوازا گیا۔تین نومبر 2013 کو لیجنڈری گلوکارہ ریشماں گلے کے سرطان کے باعث مداحوں کو” لمبی جدائی” دے گئیں، مگران کا گایا کلام ان کے چاہنے والوں کے دلوں میں ہمیشہ ان کی یاد تازہ رکھے گا۔

مزید : تفریح /علاقائی /اسلام آباد