”حکومت نے لبیک تحریک سے معاہدے پر عملدر آمد کے لیے 7دن مانگے ہیں“تہلکہ خیز خبر آگئی

”حکومت نے لبیک تحریک سے معاہدے پر عملدر آمد کے لیے 7دن مانگے ہیں“تہلکہ خیز ...
”حکومت نے لبیک تحریک سے معاہدے پر عملدر آمد کے لیے 7دن مانگے ہیں“تہلکہ خیز خبر آگئی

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن )آسیہ بی بی کی بریت کے بعد پاکستان میں پیداہونے والی ہنگامی صورتحال گزشتہ رات حکومت اور تحریک لبیک کے درمیان معاہدے کے بعد معمول پر آگئی ہے ۔تاہم اس معاہدے پر عملد رآمد کے حوالے سے مختلف سوالات سامنے آرہے ہیں جس میں سب سے اہم پوائنٹ یہ ہے کہ معاہدے پر کتنے عرصے میں عملدر آمد ہو گا ؟اس اہم سوال پر وفاقی وزیر مذہبی امور نورالحق قادری نے تو واضح جوب نہ دیا البتہ تحریک لبیک کے رہنما علامہ فاروق نے کہا کہ حکومت نے عملدرآمد کے لیے 7دن مانگے ہیں ۔

نجی نیوز چینل جیو نیوز کے پروگرام ”نیا پاکستان “میں گفتگو کرتے ہوئے نور الحق نے کہا کہ جو معاملہ عدالت چلا جائے تو حکومت اس میں معاونت کر سکتی ہے ،فیصلہ عدالت کا ہوتا ہے ،جن پر ایف آئی آر ہو چکی ہیں ان سے متعلق قانونی طریقہ کار اختیار کیا جائے گا ۔اس موقع پر تحریک لبیک کے رہنماعلامہ فاروق نے کہا کہ طے ہوا تھا کہ زیر حراست افراد فوری طور پر رہا اور مقدمات دو تین دن میں ختم ہو جائیں گے ،ہمیں امید ہے کہ ہم سے جو مذاکرات میں کہا گیا اس پر عمل ہو گا ۔اس پر اینکر پرسن طلعت حسین نے سوال کیا کہ اس معاہدے پر عملد رآمد کے لیے کتنا وقت لگے گا جس پر وفاقی وزیر مذہبی امور نور الحق نے کہا کہ اس معاہدے پر جلد عملدرآمد ہو گا ،طلعت حسین صاحب جب دونوں فریق راضی ہیں تو آپ غلط فہمیاں کیوں پیدا کر رہے ہیں ؟۔دوسری جانب علامہ فاروق الحسن قادری نے کہا کہ حکومت کے ساتھ طے ہوا کہ 7دن میں معاہدے پر عملد رآمد ہو گا ۔ان کاکہنا تھا کہ اگر معاہدے پر عملد رآمد نہ ہوا تو پھر حکومت بھی یہاںپر ہے ،ہم بھی یہاں ہیں اور سڑکیں بھی یہاں ہیں ۔

مزید : قومی