ٹرین حادثہ، 5لاشوں کی شناخت، نشتر میں زیر علاج زخمی جاں بحق

ٹرین حادثہ، 5لاشوں کی شناخت، نشتر میں زیر علاج زخمی جاں بحق

  



ملتان،رحیم یارخان، لیاقت پور، (سپیشل رپورٹر، وقائع نگار، بیورورپورٹ، نمائند ہ پاکستان)تیز گام ایکسپریس بڑے حادثے سے بال بال بچ گئی سجان پور کے قریب ٹرین کو روک کر ریلوے ٹریک کی مرمت کی گئی تفصیل کے مطابق ریلوے کا سٹاف معمول کی پیٹرولنگ پر برجی نمبر 103 کے ایم سجان پور پہنچا جہاں پرریلوے ٹریک کے نٹ بولٹ کھلے ہوئے تھے کراچی سے راولپنڈی جانے والی تیز گام(بقیہ نمبر36صفحہ12پر)

کی آمد سے چند لمحے قبل ریلوے اہلکاروں نے کریکر دھماکے کے ذریعے روکا جس کے بعد ٹریک کی فوری مرمت کی گئی مرمت کے بعد ٹرین کو روانہ کیا گیا پولیس نے واقع کی تحقیقات شروع کر دی ہیں لیاقت پور کے قریب حادثہ کا شکار ہونے والی تیز گام ایکسپریس میں جاں بحق ہونے والے 74 افراد میں سے 5لاشوں شناخت ہوپائی،اور اسکے ساتھ ساتھ 17 زخمیوں کو بھی اسی ہسپتال میں طبی امداد فراہم کرنے کا عمل جاری ہے ڈاکٹروں کا کہنا ہے کہ زخمی ہونے والے 17 افراد کی بہترین دیکھ بھال جاری ہے اور اسکے ساتھ ساتھ شیخ زید ہسپتال میں 76 افراد کی لاشوں میں سے 5 افراد کی شناخت کا عمل مکمل کر لیا گیا ہے جن میں سے 3 لاشیں نواز علی، محمدفاروق میرپورخاص اور عمرکوٹ کے عبدالجبار کی لاشیں ورثاء کے حوالے کردی گئی جبکہ 2 ہسپتال کے سرد خانے میں امانتاً رکھ دی گئی ہیں اور 55 افراد کی ڈیڈ باڈیز کے نمونے لیکر فرانزک کیلئے بھجوائے جارہے ہیں جس کو ایک ہفتے میں مکمل کرکے رپورٹ پیش کی جائے گی اور اپنے پیاروں کے لاشوں کی شناخت کیلئے آنے والے 45 افراد کے ڈی این اے کا عمل ہسپتال میں لگائے جانے والے کیمپ میں جاری ہے اور ڈی این اے میچنگ کے بعد شناخت ہونے والی تمام ڈیڈ باڈیز کو ورثاء کے حوالے کیا جائے گا۔ اسسٹنٹ کمشنر لیاقت پور اصف اقبال نے تیز گام ٹرین حادثہ میں جاں بحق ہونے والی نا قابل شناخت ڈیڈ بادیز کو تحصیل ہسپتال لیاقت پور سے ایمبولینسز کی بجائے تین منی ڈالوں کے فرش پر ڈال کر شیخ زید ہسپتال رحیم یار خان بھجوانے کی انکوائری شروع کر دی ہے۔سانحہ لیاقت پور نشتر ہسپتال ملتان میں زیر علاج ایک زخمی دم توڑ گیا چار زخمی مریضوں کی حالت تشویشناک بتائی جاتی ہے انتہائی نگہداشت وارڈ میں منتقل کر دئیے گئے دیگر چار مریضوں کو جنرل وارڈز میں منتقل کر کے علاج جاری ہے۔نشتر ہسپتال میں زیرعلاج لیاقت نامی زخمی دم توڑ گیا۔لیاقت نامی زخمی کو دو روز پہلے نشتر ہسپتال منتقل کیا گیا تھا۔۔جبکے دو روز پہلے 9 زخمیون کو برن یونٹ لایاگیا تھا،جن میں شعبہ ایمرجینسی میں زیر علاج پانچ میں سے ایک زخمی مریض پینتالیس سالہ لیاقت کو حالت خراب ہونے پر شعبہ انتہائی نگہداشت منتقل کیا گیا تھا جو کے گزشتہ روزدم توڑ گیا،۔ جبکہ برن یونٹ میں زیر علاج 46 سالہ عبدالرحمن 32 سالہ رضوان 36 سالہ مختیار اور 36 سالہ رفیق کو حالت بگڑنے پر برن یونٹ کے انتہائی نگہداشت منتقل کر دیا گیا جبکہ 38 سالہ زاہد،45 سالہ اختر اور 25 سالہ شہزاد کو جنرل سرجری وارڈ نمبر پانچ منتقل کر دیا گیا۔جہاں انکا علاج جاری ہے اور حالت خطرے سے باہر بتائی جا رہی ہے،جبکہ 25 سالہ کاشف کو پہلے وارڈ نمبر اکیس منتقل کیا گیا تھا بعدازاں کاشف کو بھی وارڈ نمبر پانچ منتقل کر دیا گیا۔ڈاکٹرز کے مطابق زخمی مریضوں کا علاج کیا جا رہا ہے جبکے برن یونٹ میں زیرعلاج زخمی جسم میں دھواں بھرنے اور جھلسنے کے باعث تشیوناک حالت میں لائے گئے تھے جن کی جان بچانے کی کوشش کی جا رہی ہے۔چیف وہپ قومی اسمبلی و ایم این اے ملک محمد عامر ڈوگر نے کہا ہے کہ تیزگام ٹرین حادثے میں مرحومین کے ورثاء کے غم میں برابر کے شریک ہیں، دوسری جانب زخمیوں کے علاج معالجہ کیلئے حکومت تمام تر وسائل بروئے کار لارہی ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے برن یونٹ ملتان میں تیز گام سانحہ کے زخمیوں کی عیادت کرنے کے موقع پر کیا۔ جبکہ اس موقع پر اشرف ناصر خان، راؤ آصف، شاہد محمود انصاری، ظہیر اعوان، ملک معاویہ، نعمان جانی ہمراہ تھے۔ ایم این اے ملک محمد عامر ڈوگر نے مریضوں کی عیادت کی اور ان کی جلد صحت یابی کے حوالے سے خصوصی دعا بھی کی اور اس موقع پر مزید کہا کہ تیزگام حادثے کے حوالے سے تحقیقات جاری ہیں اور شواہد اکٹھے کرنے کے بعد اصل حقائق سامنے آجائیں گے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ٹرین حادثہ کے مرحومین کے ورثاء کو حکومت کی جانب سے امدادی معاونت بھی کی جائے گی۔و زیر اعلیٰ پنجاب کے معا ون خصو صی حاجی جا وید ا ختر انصاری نے گز شتہ روز نشتر ہسپتال وبر ن یونٹ میں سا نحہ لیا قت پو ر کے حا دثہ میں ز خمی ہو نے وا لو ں کی عیاد ت کی۔اس موقع پر انہو ں نے گفتگو کر تے ہو ئے کہا کہ ہم ٹر ین حادثہ کے متاثرین کے سا تھ ہیں۔حکو مت پنجا ب ان کے علا ج معا لجہ میں کو ئی کسر نہ چھو ڑ ے گی۔انہو ں نے کہا کہ ٹر ین حا د ثہ کے زخمیو ں کو 5 لا کھ جبکہ جا ں بحق افر اد کے لوا حقین کو 15 لا کھ روپے فی کس جلد دے دئیے جائیں گے۔انہو ں نے ہسپتا ل انتظا میہ کو ہدا یت کی کہ زخمیو ں کے علا ج معالجے کیلئے جن ادویا ت کی مزیدضر و رت ہے ان کا فور ی بند وبست کیا جا ئے۔اس موقع پر وقاص انصا ر ی، عبیداللہ انصا ر ی،ڈا کٹر ناہید اختر بھی موجود تھے۔

ٹرین حادثہ

مزید : ملتان صفحہ آخر