فلسطین تاریخی مسجد ابراہیمی میں اذان پرپابندی کا سلسلہ برقرار

فلسطین تاریخی مسجد ابراہیمی میں اذان پرپابندی کا سلسلہ برقرار

  



الخلیل (این این آئی)قابض صہیونی فوج اور پولیس کی جانب سے فلسطین کے مغربی کنارے کے تاریخی شہرالخلیل کی تاریخی جامع مسجد میں فلسطینی شہریوں کی نمازوں کی ادائی اور اذان پر پابندیوں کا ناروا اور غیرقانونی سلسلہ بدستور جاری ہے۔ اکتوبر 2019 کے دوران مسجد ابراہیمی میں 78 بار اذان کی ادائی پر پابندی لگائی گئی۔مرکز اطلاعات فلسطین کے مطابق فلسطینی محکمہ اوقاف و مذہبی امور کی جانب سے جاری کردہ ایک بیان میں بتایا گیا کہ مسجد ابراہیمی میں اذان اور نماز پر صہیونی پابندیوں میں اضافہ ہوچکا ہے۔ مسجدابراہیمی اور مسجد اقصی پر یہودیوں کا ملکیت کا دعوی باطل اور جھوٹ پر مبنی ہے اور صہیونی قوتیں ان دونوں مقدس مقامات کے حوالے سے دنیا کو گمراہ اور تاریخ کو مسخ کر رہی ہیں۔بیان میں کہا گیا کہ مسجد ابراہیمی میں اذانوں اور نمازوں کی ادائی پر پابندی مذہبی آزادیوں پر حملے کے مترادف ہے اور صہیونی یہ غیرقانونی کارروائیاں روز مرہ کی بنیاد پر کر رہے ہیں۔ اپریل کے دوران صہیونی حکام کی جانب سے مسجد ابراہیمی میں اکاون اذان دینے پر پابندی لگائی اور دعوی یہ کیا گیا کہ اذان دینے سے یہودیوں کے سکون میں خلل پیدا ہوتا ہے۔ 

مزید : علاقائی