کسٹم حکام تاجروں کو ہر ممکن سہولتیں مہیا کریں، فیصل آباد چیمبر

کسٹم حکام تاجروں کو ہر ممکن سہولتیں مہیا کریں، فیصل آباد چیمبر

  



 فیصل آباد (بیورورپورٹ)فیصل آباد سے درآمدات اور برآمدات کو بڑھانے کیلئے کسٹم کی طرف سے تاجروں کو ہر ممکن سہولتیں مہیا کی جائیں گی۔ یہ بات چیف کلکٹر کسٹمزاپریزمنٹ فرید اقبال قریشی نے فیصل آباد چیمبر آ ف کامرس اینڈانڈسٹری کے ایک وفد سے ملاقات کے دوران بتائی جس نے صدر رانا محمد سکندر اعظم خاں کی قیادت میں ان سے ملاقات کی۔ انہوں نے بتایا کہ بانڈڈ وئیر ہاؤسز کیلئے سال میں ایک بار آڈٹ کرانا لازم ہے مگر یہاں بہت سے وئیر ہاؤسز نے آٹھ آٹھ سال سے آڈٹ نہیں کرایا۔ انہوں نے کہا کہ وہ قانون کے دائرہ کار میں رہتے ہوئے درآمدی اور برآمدی تاجروں کو ہر ممکن سہولتیں مہیا کریں گے۔ تاکہ خاص طور پر برآمدات کو بڑھا کے ملک کیلئے زیادہ سے زیادہ زرمبادلہ کمایا جا سکے۔ انہوں نے کہا کہ سمگلنگ ایک ناسور ہے جس کا خاتمہ ضروری ہے۔ تاہم اس سلسلہ میں کوشش کی جائے گی کہ چھوٹے تاجروں کو پریشان نہ کیا جائے۔اس سے قبل فیصل آباد چیمبر آف کامرس اینڈانڈسٹری کے صدر رانا محمدسکندر اعظم خاں نے کہا کہ کسٹم سمیت تمام سرکاری اداروں کے افسرانہ رویہ میں واضح تبدیلی آنی چاہیے تاکہ وہ خدمت کے جذبے سے لوگوں کیلئے مشکلات کھڑی کرنے کی بجائے انہیں زیادہ سے زیادہ سہولتیں دے سکیں۔ انہوں نے کہا کہ کسٹم حکام اکثر و بیشتر بڑے سمگلروں کو پکڑنے کی بجائے چنگ چی پر لادے ہوئے سامان کو پکڑ لیتے ہیں جس سے خاص طور پر چھوٹے تاجر طبقہ میں خوف و ہراس پیدا ہوتا ہے۔ انہوں نے چیف کلکٹر سے کہا کہ وہ متعلقہ حکام کو واضح ہدایات جاری کریں کہ وہ سمگلنگ کو سرحدوں پر روکیں اور اندرون ملک چھوٹے تاجروں کی پکڑ دھکڑ سے اجتناب کیا جائے۔ انہوں نے مزید بتایا کہ برآمدی اشیاء کی تجزیاتی رپورٹ کیلئے نمونے لاہور بھیجنے پڑے ہیں جس کی وجہ سے نہ صرف تاجروں پر اضافی مالی بوجھ پڑتا ہے بلکہ غیر ضروری تاخیر سے برآمد بھی متاثر ہوتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس تجزیاتی رپورٹ کیلئے فیصل آباد میں ہی بندوبست کیا جائے۔ انہوں نے بتایا کہ دی بوک کانیا ورژن آنے کی وجہ سے تمام کمپنیوں کو بلاک کر دیا گیا ہے جس سے خاص طور پر نامور اور نیک نام کمپنیاں سخت پریشان ہیں۔ انہوں نے کہا کہ جن کمپنیوں کی ساکھ اچھی ہے اور وہ کافی عرصہ سے کسٹم سے کام کر رہی ہیں ان کو بلاوجہ بلاک نہ کیا جائے۔ انہوں نے چیف کلکٹر سے کہا کہ وہ اس بات کا بھی ناقدانہ جائزہ لیں کہ فیصل آباد ڈرائی پورٹ جہاں سے روزانہ چار سے ساڑھے چار ہزار کنٹینر جاتے رہے ہیں اس کا بزنس کیوں صرف چند کنٹینروں تک محدود ہو کر رہ گیا ہے۔ انہوں نے اس سلسلہ میں مختلف وجوہات کا ذکر کیا اور کہا کہ یہاں درآمدی کنٹینروں کی مالیت کا تخمینہ زیادہ لگایا جاتا ہے جس کی وجہ سے مقامی درآمد کنندگان اپنے کنٹینر فیصل آباد سے کلیئر کرانے کی بجائے دوسری ڈرائی پورٹس کو ترجیح دیتے ہیں۔

 انہوں نے پنجاب حکومت کی طرف سے بعض غیر ضروری ٹیکسوں کو بھی درآمدات و برآمدات کے سلسلہ میں رکارٹ قرار دیا اور کہا کہ کسٹم کولوگوں کیلئے زیادہ سے زیادہ آسانیاں پیدا کرنی چاہیں۔ انہوں نے کہا کہ بانڈڈ وئیر ہاؤسز کے لائسنسوں کیلئے غیر ضروری دستاویزات طلب کی جاتی ہیں جن کی وجہ سے لائسنسوں کے اجراء میں تاخیر ہوتی ہے۔ بانڈڈ وئیر ہاؤسز کے آڈٹ کے سلسلہ میں رانا محمد سکندر اعظم خاں نے کہا کہ وہ خلاف قانون کام کرنے والے کسی بھی شخص کی حمایت نہیں کریں گے تاہم کسٹم حکام کو قانون کے پابند تاجروں کو زیادہ سے زیادہ سہولتیں دینی چاہیں۔ انہوں نے اینٹی نارکوٹکس فورس کا بھی ذکر کیا جو چیک کئے ہوئے کنٹینروں کو باربار کھول کے سامان کو خراب کر دیتے ہیں جس کی وجہ سے برآمدی کنٹینروں کی روانگی میں تاخیر ہوتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس سلسلہ میں اچھی شہرت رکھنے والے اداروں سے اس قسم کا سلوک نہیں ہونا چاہیے۔ اس موقع پر کلکٹر کسٹم اپریزمنٹ صائمہ شہزاد کے علاوہ فیصل آباد ڈرائی پورٹ کے بانی صدر میاں محمد لطیف، موجودہ چیئرمین چوہدری مشتاق علی چیمہ اور وائس چیئرمین مزمل سلطان بھی موجود تھے۔ 

مزید : کامرس